Monday - 2018 June 25
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 72537
Published : 8/4/2015 13:55

فلسطینی عیسائی، یرموک پناہ گزین کیمپ میں تشدد کی مذمت

فلسطین کی عیسائی برادری نے یرموک پناہ گزیں کیمپ میں روا رکھے جانے والے تشدد کی مذمت کی ہے۔
فلسطین کی خبر رساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق تنظیم آزادی فلسطین پی ایل او میں عیسائی برادری کے نمائںدے پاپ مانوئیل مسلم اور روم کےآرتھوڈکس کلیسا کے آرچ بشپ عطاء اللہ حنا نے دمشق کے مضافات میں واقع فلسطینی پناہ گزینوں کے کیمپ یرموک میں دہشتگرد گروہ داعش کے مظالم اور تشدد کی مذمت کرتے ہوئے اسے انسانیت کے خلاف ایک بڑا جرم قرار دیا ہے۔ پی ایل او میں عیسائی نمائندوں نے کہا ہے کہ یرموک پناہ گزیں کیمپ ایک نئے المیۓ کے دہانے پر کھڑا ہے اور اس پناہ گزیں کیمپ میں روا رکھا جانے والا ظلم سنہ انیس سو اڑتالیس میں فلسطینی پناہ گزینوں کے ساتھ پیش آںے والے المیۓ جیسا ہے۔
دوسری جانب برطانیہ کی وزارت خارجہ کے ترجمان نے منگل کو شام میں واقع یرموک پناہ گزین کیمپ کی صورتحال پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے اس کیمپ میں رہنے والے فلسطینیوں کی صورتحال کو انتہائی ابتر قرار دیا ۔ برطانوی وزارت خارجہ کے ترجمان نے کہا ہے کہ اس کیمپ میں دہشتگرد گروہ داعش سمیت مختلف دہشتگرد گروہوں کی جھڑپیں ہوتی رہتی ہیں۔ انھوں نے مزیدکہا کہ تین ہزار پانچ سو بچوں سمیت تقریبا اٹھارہ ہزار افراد اس کیمپ میں محاصرے میں ہیں اور ان تک انسان دوستی پر مبنی کوئی امداد بھی نہیں پہنچ رہی ہے۔
ادھر شام کے نائب وزیر خارجہ فیصل مقداد نے بھی تنظیم آزادی فلسطین کے نمائندے کے ساتھ ملاقات میں شام کی اسپیشل فورسز کو یرموک پناہ گزین کیمپ بھیج کر دہشتگرد گروہ داعش کے عناصر کے محاصرے سے اس کیمپ کو آزاد کرنے پر شام کی آمادگی کا اظہار کیا۔ فیصل مقداد نے مزید کہا کہ بین الاقوامی تنظمیوں کو بھی یرموک پناہ گزیں کیمپ میں دہشتگرد گروہ داعش کے مظالم کو روکنے کے لۓ قابل عمل اور ٹھوس اقدامات انجام دینے چاہئیں۔ اور اس کیمپ میں رہنے والے فلسطینی پناہ گزینوں کی مشکلات کے حل کے راستے تلاش کۓ جانے چاہئیں۔


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Monday - 2018 June 25