Tuesday - 2018 Dec 11
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 74236
Published : 6/5/2015 21:21

سعد حریری نے داعش سے صلح کا اعلان کر دیا

لبنان کی المستقبل پارٹی کے سربراہ سعد الحریری نے کہا ہے کہ داعش اور النصرہ سے ان کی کوئی جنگ نہیں ہے- لبنان کی المستقبل پارٹی کے سربراہ نے ایک بیان جاری کرکے داعش اور النصرہ تکفیری دہشتگردوں کے ساتھ اپنی صلح کا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ آل سعود کے لبنانی اتحادیوں کی داعش اور النصرہ سے کوئی جنگ نہیں ہے۔ سعدحریری نے اپنے اس بیان میں لبنانیوں سے مطالبہ کیا کہ وہ حتی لبنان کی حمایت کے لئے بھی تکفیری دہشتگردوں کے خلاف جنگ میں حزب اللہ کے مجاہدین کی مدد نہ کریں- سعد حریری کا یہ بیان منگل کو حزب اللہ کے سربراہ سید حسن نصراللہ کے اہم خطاب کے موقع پر سامنے آیا ہے- سعد حریری نے تاکید کی ہے کہ وہ تکفیری دہشتگردوں کے خلاف جنگ شروع ہونے کی خبر سے بھی وحشت زدہ ہیں- المستقبل پارٹی کے سربراہ نے لبنان اور لبنانی عوام کی حمایت کے لئے حزب اللہ کی پیشگی جنگوں پر اعتراض کیا۔ سعد حریری کا کہنا تھا کہ چونکہ لبنان اور اس کی سرحدوں کی حفاظت کی ذمہ داری فوج پر ہے، لہذا تکفیری دہشتگردوں سے جنگ میں فوج کو تنہا چھوڑ دینا چاہئے- آل سعود کے لبنانی اتحادی، جو صرف اپنی جان بچانے کے لئے لبنانی عوام کے مسائل و مشکلات میں شریک ہونے کے لئے تیار نہیں ہیں اور پیرس و ریاض کے محلوں میں عیش و آرام کی زندگی گذار رہے ہیں، کا خیال ہے کہ دہشتگردوں کو لبنان پر قبضہ کر لینے دینا چاہئے اور پھر صرف فوج اور سیکورٹی اہلکار ان سے جنگ کریں اور اپنی جانوں کو خطرے میں ڈالیں- ماہرین کا خیال ہے کہ سعد الحریری کا یہ بیان ایسے عالم میں سامنے آیا ہے کہ سعودیوں اور صیہونیوں کے حمایت یافتہ تکفیری دہشتگرد ہر روز لبنان پر قبضہ کرنے اور وہاں حکومت تشکیل دینے کی دھمکی دے رہے ہیں اور لمبے عرصے سے لبنان پر حملہ کرنے کے لئے موقع کی تلاش میں لبنان کی سرحدوں کے آس پاس ڈیرہ ڈالے ہوئے ہیں اور اگر حزب اللہ کے جانبازوں، فوج اور سیکورٹی اہلکاروں یعنی فوج، قوم اور حزب اللہ کی قربانیاں نہ ہوتیں تو تکفیری دہشتگرد اب تک بیروت میں پریڈ کر رہے ہوتے-


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Tuesday - 2018 Dec 11