Monday - 2018 Oct. 22
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 74327
Published : 10/5/2015 8:52

داعش کی سفاکیت، نوعمر بچے لڑائی کے لیے بھیج دیے

دہشتگرد گروہ داعش نے بیجی شہر اور الفتحہ کے علاقے پر حملہ کرنے کے لئے تین سو پچاس مسلح نوعمر اور نوجوان لڑکے حویجہ شہر سے جبال حمرین کے علاقے میں منتقل کر دیئے ہیں- عراقی خبر رساں ایجنسی السومریہ کی رپورٹ کے مطابق ایک سیکورٹی ذریعے نے کہا ہے کہ دہشتگرد گروہ داعش نے تین سو پچاس مسلح افراد کو جنوب مغربی کرکوک میں واقع حویجہ شہر سے جبال حمرین کے علاقے میں منتقل کر دیا ہے- واضح رہےکہ ان تین سو پچاس مسلح افراد میں سے زیادہ تر دس سے پندرہ برس کے نوعمر اور نوجوان لڑکے ہیں- دہشتگرد گروہ داعش، جنوب مغربی کرکوک میں واقع علاس اور عجیل آئل فیلڈز پر حملے میں اپنے دہشتگردوں کے علاوہ ان نوعمر لڑکوں کو بھی شامل کرنا چاہتا ہے- ایسی حالت میں کہ جب عراق کی فوج عوامی رضاکار فورس کے تعاون سے دہشتگرد گروہ داعش کے زیر قبضہ علاقوں کی آزادی کے لئے اپنی پیشقدمی جاری رکھے ہوئے ہے یہ دہشتگرد گروہ بھی جبال حمرین کے علاقے میں اپنی نفری میں اضافہ کر کے اس علاقے اور اس کے بعد بیجی شہر اور الفتحہ کے علاقے پر حملے کی تیاری کر رہا ہے- جمعے کے دن کرکوک کے جنوب مغرب میں دہشتگرد گروہ داعش کے ٹھکانوں پر عراقی فوج کے فضائی حملوں میں بتیس دہشتگرد ہلاک اور زخمی ہو گئے- دوسری جانب دہشتگرد گروہ داعش کے عناصر نے جمعے کے دن حویجہ شہر کے مضافات میں واقع ایک دیہات میں العبید قبیلے کے ایک سردار کے گھر پر حملہ کر کے ان کو اغواء کر لیا- دہشتگرد گروہ داعش ایسے تمام افراد کو اغوا کر لیتا ہے جن کے بارے میں اسے شک ہوتا ہےکہ یہ افراد عراق کی حکومت کے ساتھ تعاون کرتے ہیں-


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Monday - 2018 Oct. 22