Saturday - 2018 Dec 15
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 74828
Published : 19/5/2015 9:50

ایران پرامن ایٹمی سرگرمیاں جاری رکھے گا

اسلامی جمہموریہ ایران کے صدر ڈاکٹر حسن روحانی نے کہا ہے کہ تہران اپنی پرامن ایٹمی سرگرمیاں جاری رکھے گا- صدر مملکت ڈاکٹر حسن روحانی نے ہنگری کے وزیر خارجہ و تجارت پیٹر سزیجارٹو سے ملاقات میں اس بات پر زور دیا ہے کہ جس طرح ایران نے ثابت کیا ہے کہ وہ شفاف ہے اور مضبوط ارادے کے ساتھ مذاکرات میں آیا ہے، اسی طرح وہ اپنی ایٹمی سرگرمیاں بھی پرامن راستے پر جاری رکھے گا- صدر روحانی نے دباؤ اور پابندیوں کی روش کی مذمت کرتے ہوئے اسے ناقابل قبول اور بے نتیجہ قرار دیا اور کہا کہ اب تک دونوں فریقوں کے درمیان ایٹمی مذاکرات میں اچھی پیشرفت ہو چکی ہے اور اگر مقابل فریق میں سنجیدہ اور مضبوط ارادہ موجود ہو تو ہم طے شدہ مدت کے اندر حتمی معاہدے تک پہنچ سکتے ہیں- صدر مملکت ڈاکٹرحسن روحانی نے آج کی دنیا میں انتہا پسندی اور تشدد کے مسئلے کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ دہشت گردی کے خلاف جنگ میں تمام ملکوں کو اس بات کا قائل ہونا پڑے گا کہ دہشت گردی کسی کے فائدے میں نہیں ہے- ڈاکٹر حسن روحانی نے اس بات پر زور دیا کہ جو لوگ دہشت گرد گروہوں کو اپنے مقاصد حاصل کرنے کے لیے ایک ہتھکنڈے اور حربے کے طور پر استعمال کر رہے ہیں، اب انھیں جان لینا چاہیے کہ یہ غلط راستہ ہے کیونکہ گزشتہ پندرہ سولہ سال کے دوران جس ملک نے بھی دہشت گرد گروہ قائم کرکے اسے مضبوط بنایا آخرکار وہی گروہ اس کے گلے پڑ گیا- ڈاکٹر حسن روحانی نے یمن پر فوجی جارحیت کو عالمی قوانین کی خلاف ورزی قرار دیتے ہوئے کہا کہ آج یمن میں ہزاروں بےگناہ افراد بےگھر اور زخمی ہو گئے ہیں، بمباری سے انھیں بے پناہ مشکلات اور مسائل کا سامنا ہے، ان افراد کو عالمی برادری کی امداد کی اشد ضرورت ہے- انہوں نے کہا کہ ہمیں امید ہے کہ ہم ایک دوسرے کے تعاون سے یمن میں جنگ کی آگ کے شعلے ہمیشہ کے لیے خاموش کر سکیں گے۔ ہنگری کے وزیر خارجہ اور وزیر تجارت پیٹر سزیجارٹو نے بھی اس ملاقات میں دہشت گرد گروہ داعش کی سرگرمیوں پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ بوڈاپسٹ ادیان کے درمیان گفتگو کو آسان بنانے کے لیے اسلامی جمہوریہ ایران ایران کے صدر کی کوششوں کو قدرکی نگاہ سے دیکھتا ہے-


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Saturday - 2018 Dec 15