Monday - 2018 Sep 24
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 75679
Published : 31/5/2015 18:32

آئی اے ای اے کی تازہ رپورٹ کی قانونی مشکلات

ایران کے ایٹمی توانائی کے ادارے کے ترجمان نے کہا ہے کہ آئی اے ای اے کے سربراہ کی حالیہ رپورٹ میں تکراری مسائل اور قانونی مشکلات پائی جاتی ہیں- ایران کے ایٹمی ادارے کے ترجمان اور قانونی اور عالمی امور شعبے کے سربراہ بہروز کمالوندی نے کہا ہے کہ آئی اے ای اے کے سربراہ یوکیا امانو کی تازہ رپورٹ میں کوئی نئی بات نہیں ہے- انہوں نے کہا کہ گذشتہ برسوں کی رپورٹوں کا اگر موازنہ کیا جائے تو ان میں ہمیں صرف بار بار دوہرائے جانے والے مسائل، اور بے بنیاد مطالبات اور الزامات دکھائی دیں گے- کمالوندی نے کہا کہ اس رپورٹ میں دو اہم موضوعات کا بھی ذکر کیا گیا ہے جن میں پہلا موضوع مشترکہ اقدام پروگرام اور پانچ جمع ایک گروپ کے ساتھ طے شدہ عبوری معاہدے پر عمل درآمد ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس رپورٹ اور اس سے پہلے کی رپورٹوں میں اس بات کی تصدیق کی گئی ہے کہ ایران نے اپنی ذمہ داریوں پر مکمل طور سے عمل کیا ہے۔ انہوں نے اس سوال کے جواب میں کہ یوکیا امانو نے ایران کی ایٹمی سرگرمیوں کے بارے میں رائے دینے میں ناتوانی کا اظہارکیا ہے، کہا کہ یہ مسئلہ این پی ٹی کے اضافی پروٹوکول کے تحت قابل غور ہے- بہروز کمالوندی نے کہا کہ ہم اس بات پر یقین رکھتے ہیں کہ ہم نے اپنا ایٹمی پروگرام مکمل طرح سے سب کے سامنے رکھ دیا ہے اور بارہا اعلان بھی کیا ہے کہ ہمارا ایٹمی پروگرام، پرامن ہے-


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Monday - 2018 Sep 24