شنبه - 2019 مارس 23
ہندستان میں نمائندہ ولی فقیہ کا دفتر
Languages
Delicious facebook RSS ارسال به دوستان نسخه چاپی  ذخیره خروجی XML خروجی متنی خروجی PDF
کد خبر : 76996
تاریخ انتشار : 14/6/2015 19:48
تعداد بازدید : 11

ایٹمی مذاکرات میں اصل کامیابی ایرانی قوم کی ہوگی

صدر ڈاکٹر حسن روحانی نے کہا ہے کہ ایران دنیا کے ساتھ تعمیری تعاون اور دوستی کو فروغ دینا چاہتا ہے۔
تہران میں ایک پر ہجوم پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے صدر مملکت ڈاکٹر حسن روحانی نے کہا کہ ایران اپنے ہمسایوں سمیت پوری دنیا کے ساتھ تعمیری تعاون کا خواہاں ہے۔ صدر حسن روحانی نے کہا کہ ایران اپنے تمام مسلم حقوق حاصل کرنا چاہتا ہے۔ صدر  مملکت نے کہا کہ دو برس قبل تک پانچ جمع ایک کے ممالک ایران کو اسکی سرزمین پر یورینیم کی افزودگی کا حق نہیں دینا چاہتے تھے لیکن آج مغربی طاقتیں بھی کہہ رہی ہیں کہ ایران کو اپنی سرزمین پر یورینیم افزودہ کرنے کا حق حاصل ہے اور نطنز نیز فوردو کی ایٹمی تنصیبات ہرگز بند نہیں ہونگی۔انہوں نے کہا کہ ایٹمی مذاکرات کا سب سے بڑا فائدہ یہ ہوا ہے کہ مغرب نے ہمارے ایٹمی حقوق کو تسلیم کرلیا ہے-  ڈاکٹر حسن روحانی نے کہا کہ میں واضح کردینا چاہتا ہوں کہ پابندیوں کے خاتمے کی صورت میں ہی مجوزہ ایٹمی معاہدے پر عمل ہوگا- ان کا کہنا تھا کہ دو برس قبل تک کوئی اس بات کو تسلیم نہیں کرتا تھا کہ ایک معاہدے سے اقوام متحدہ کی ظالمانہ قراردادوں کو منسوخ کردیا جائے گا۔صدر مملکت  نے کہا کہ ہم نے جو حاصل کیا ہے کہ وہ ایرانی قوم کی کامیابی ہے اور ایرانی قوم نے استقامت اور پائداری سے یہ کامیابی حاصل کی ہے۔ ڈاکٹر حسن روحانی نے ایک بار پھر کہا کہ پابندیاں غیر قانونی، غیر انسانی اور غیر اخلاقی ہیں۔ایک سوال کے جواب میں صدر حسن روحانی نے کہا کہ ہماری بھرپور کوشش ہے کہ ہم ایک باعزت معاہدے تک پہنچیں تا کہ ایرانی قوم کے تمام حقوق حاصل ہوجائیں اور ہماری ریڈ لائنیں بھی محفوظ رہیں۔انہوں نے کہا کہ ایران کے معین کردہ اصول پر مغرب نے اتفاق کرلیا ہے لیکن تفصیلات پر کافی اختلافات پائے جاتے ہیں۔ صدر مملکت نے کہا کہ ہماری مذاکرات کار ٹیم بھرپور طرح سے حکومت کے معین کردہ حدود میں ہی مذاکرات کررہی ہے اور اگر مد مقابل بے جا مطالبات نہ کرے تو حتمی معاہدہ حاصل ہوسکتا ہے۔


نظر شما



نمایش غیر عمومی
تصویر امنیتی :