Thursday - 2018 Sep 20
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 78675
Published : 14/7/2015 11:51

قیدیوں کے تبادلے کے مذاکرات، حماس کی شرائط

فلسطین کی تحریک حماس نے کہا ہے کہ وہ صیہونی حکومت کے ساتھ قیدیوں کے تبادلے کے سلسلے میں مذاکرت کے لئے کچھ شرایط رکھے گی۔ فلسطین کی الرسالہ نیوز ویب سائٹ کی رپورٹ کے مطابق تحریک حماس میں خارجہ تعلقات شعبے کے سربراہ اسامہ حمدان نے کہا ہے کہ قیدیوں کے تبادلے کے لئے ہماری یہ شرطیں ہیں کہ صیہونی حکومت لاپتہ فوجیوں کی صحیح تعداد کا اعتراف کرے، آئںدہ مذاکرات کے لئے آمادگی رکھے اور شالیت نامی معاہدے کی پاسداری کرے جس کی رو سے پہلے قیدیوں کا تبادلہ ہوا تھا۔ واضح رہے اکتوبر دو ہزار گیارہ میں تحریک حماس اور صیہونی حکومت کے درمیان قیدیوں کے تبادلے کا معاہدہ ہوا تھا۔ اس معاہدے کی رو سے تحریک حماس نے صیہونی فوج کے قیدی گلعاد شالیت کی رہائی کے عوض ایک ہزار ستائیس فلسطینیوں کو آزاد کرایا تھا۔ اسامہ حمدان نے تحریک حماس کے پاس موجود صیہونی فوج کے قیدیوں کے بارے میں کہا کہ تحریک حماس اعداد و شمار کے مسئلے میں نہیں پڑے گی۔ انہوں نے کہا کہ اسرائیل نے پہلے تو چند قیدیوں کا انکار کیا تھا اور اس کے بعد ان کی تعداد کے بارے میں بات کی۔ صیہونی حکومت نے گذشتہ ہفتے اعلان کیا تھا کہ حماس کے پاس دو ہزار چودہ میں ہونے والی پچاس روزہ جنگ میں ہلاک ہونے والے اسرائیل کے دو فوجیوں کی لاشوں ہیں اور اس کے علاوہ دو فوجی بھی قید ہیں۔


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Thursday - 2018 Sep 20