Friday - 2018 july 20
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 78697
Published : 14/7/2015 12:37

صیہونی حکومت فلسطینیوں کی اقتصادی ترقی میں سب سے بڑی رکاوٹ

فلسطین کی تحریک الفتح کے سینئر رہنما نے کہا ہے کہ صیہونی حکومت کی پالسیاں فلسطین کے مختلف علاقوں میں فلسطینیوں کے اقتصادی حالات میں بہتری نہ آنے کا سبب ہیں۔

فلسطین الان کی رپورٹ کے مطابق تحریک الفتح کی مرکزی کمیٹی کے رکن صائب عریقات نے پیر کے دن کہا ہے کہ غزہ پٹی اور غرب اردن کے اقتصادی حالات بہتر بنانے کے اسرائیل کے دعوے بے بنیاد ہیں کیونکہ اسرائیل نے غزہ کا محاصرہ کر رکھا ہے اور اس نے غرب اردن سے بھی بعض فلسطینی مصنوعات کی برآمدات پر پابندی عائد کر رکھی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اسرائیل اس علاقے میں صرف صیہونی کالونیوں میں توسیع کرنے کی کوشش ہے اور وہ فلسطینیوں کے معاشی حالات کو بہتر بنانے کے لئے کو ئی اقدام نہیں کر رہا ہے۔ صائب عریقات نے صیہونی پارلیمنٹ میں فلسطینی قیدیوں کو موت کی سزا دینے کے بل کو مںظور کروانے کی کوششوں کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ صیہونی حکومت ملت فلسطین کے خلاف اپنے جرائم کو قانونی حیثیت دینا چاہتی ہے۔ انہوں ںے عالمی برادری سے اپیل کی کہ وہ اسرائیل پر دباؤ ڈالے تاکہ وہ فلسطینیوں کے خلاف نسل پرستانہ اور انسانی حقوق کے منافی قوانین کو مںظور کرنے سے باز رہے۔ واضح رہے کہ اتوار کو ایسی رپورٹیں ملی تھیں کہ صیہونی پارلیمنٹ میں فلسطینی قیدیوں کو پھانسی کی سزا دینے کے بل کا جائزہ لیا گیا ہے۔ اس رپورٹ پر فلسطینی حلقوں نے رد عمل ظاہر کیا ہے۔


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Friday - 2018 july 20