Wed - 2018 Nov 21
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 79172
Published : 22/7/2015 16:41

ایٹمی مذاکرات ایرانی قوم کی عزت و وقار کی علامت

اسلامی جمہوریہ ایران کے وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ مذاکرات کے دوران سب پر عیاں ہو گیا کہ اسلامی جمہوریہ ایران دنیا کی ظاہری طور پر بڑی نظر آنے والی چھ طاقتوں کے ساتھ مذاکرات کرتا ہے ان سے بلیک میل نہیں ہوتا ہے۔ اسلامی جمہوریہ ایران کے وزیر خارجہ محمد جواد ظریف نے منگل کے دن پارلیمنٹ کے کھلے اجلاس میں ایران اور گروپ پانچ جمع ایک کے حالیہ ایٹمی مذاکرات کی وضاحت کرتے ہوئے کہا کہ ایک ہفتہ قبل ایران اور دنیا کی بظاہر چھ بڑی طاقتوں کے درمیان ایک ایسا تاریخی معاہدہ ہوا جس نے دنیا کی توجہ اپنی جانب مبذول کر لی اور دنیا والوں نے اس معاہدے کو جنگ پسندی پر معقولیت اور منطق کی فتح سے تعبیر کرتے ہوئے اس کا خیر مقدم کیا اور اسے حالیہ عشروں کے دوران بین الاقوامی تعلقات کی تاریخ میں ایک نیا موڑ قرار دیا۔ محمد جواد ظریف نے مزید کہا کہ دوستوں اور دشمنوں نے اس بات کا اعتراف کیا کہ اس معاہدے سے رہبر انقلاب اسلامی اور ایرانی عوام کی دانشمندی، وقار، طاقت، خود اعتمادی اور عزت پایہ ثبوت کو پہنچی۔ اسلامی جمہوریہ ایران کے وزیر خارجہ نے یہ بات زور دے کر کہی کہ ایران اور گروپ پانچ جمع ایک کے طویل اور کٹھن مذاکرات کے دوران سب پر عیاں ہو گیا کہ اسلامی جمہوریہ ایران دنیا کی ظاہری طور پر بڑی نظر آنے والی چھ طاقتوں کے ساتھ مذاکرات کرتا ہے لیکن ان سے بلیک میل نہیں ہوتا ہے۔ محمد جواد ظریف نے مزید کہا کہ حالیہ ایٹمی مذاکرات میں یہ بات بھی کھل کر سامنے آئی کہ اسلامی جمہوریہ ایران پابندیوں اور دباؤ کے مشکل ترین حالات میں بھی اس بات پر تیار ہے کہ برسہا برس تک استقامت کا مظاہرہ اور دو سال تک مذاکرات کرے اور دباؤ کے سامنے ڈٹا رہے، اپنے مطالبات سے دستبردار نہ ہو اور اپنی ریڈ لائنوں کو عبور نہ کرے۔ محمد جواد ظریف نے کہا کہ ایک بار پھر امریکی حکام پر یہ بات واضح ہو گئی کہ رہبر انقلاب اسلامی کے فرمان کے مطابق امریکا صرف خواب میں ہی ایران کو گھٹنے ٹیکتے ہوئے دیکھ سکتا ہے-


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Wed - 2018 Nov 21