Wed - 2018 Nov 21
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 79181
Published : 22/7/2015 17:23

ایران کے ایٹمی پروگرام کے پرامن ہونے پرتاکید

ایران کے نائب وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قرارداد، دو ہزار دو سو اکتّیس، ایٹمی سرگرمیوں کی پرامن ماہیت کی تصدیق کرتی ہے- ایران کے نائب وزیر خارجہ سید عباس عراقچی نے منگل کو پارلیمنٹ میں خارجہ پالیسی اور قومی سلامتی کمیشن میں، سلامتی کونسل کی قرارداد، دو ہزار دو سو اکتیس، اور جامع مشترکہ ایکشن پلان کے سلسلے میں اس کمیشن کی تشویش کو منطقی قرار دیا- سید عباس عراقچی نے کہا کہ پابندیوں کی منسوخی، ایران میں یورینیم کی افزودگی، ایٹمی سرگرمیوں کے جاری رہنے، سلامتی کونسل کی سابقہ قراردادوں کی منسوخی، اقوام متحدہ کے منشور کی ساتویں شق سے ایران کا باہر نکلنا ایران کے لئے مشترکہ جامع ایکشن پلان کے اہم نکات ہیں۔ سید عباس عراقچی نے سلامتی کونسل میں قرارداد، دو ہزار دو سو اکتیس، کی فوری منظوری کو جامع مشترکہ ایکشن پلان کا حصہ قرار دیا اور کہا کہ قرارداد، دو ہزار دو سو اکتیس، کی بنیاد پر ایران مخالف سابقہ قراردادوں کی منسوخی اور ایران کے ساتھ نئے تعلقات کی بنیاد سے ایران کی پرامن ایٹمی سرگرمیوں کی تصدیق ہو گئی ہے- اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل نے پیر کے روز پندرہ ووٹوں سے قرارداد، دو ہزار دو سو اکتیس، کو منظوری دے کر ایران اور گروپ پانچ جمع ایک کے درمیان ایٹمی مذاکرات کے نتیجہ خیز ہونے کی تصدیق کر دی- ایران اور گروپ پانچ جمع ایک نے بارہ سال تک مذاکرات انجام دینے کے بعد آخر کار چودہ جولائی کو ایران کی پرامن ایٹمی سرگرمیوں کے سلسلے میں بدگمانی دور کرنے اور پابندیوں کی منسوخی کے سلسلے میں نتیجے تک پہنچ گئے ہیں-


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Wed - 2018 Nov 21