Wed - 2018 Sep 26
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 79346
Published : 25/7/2015 21:8

غزہ کے بچوں پر جنگ کے بعد پڑنے والے نفسیاتی اثرات

تازہ ترین تحقیقات کے مطابق، غزہ پر غاصب صیہونی حکومت کے پچاس روزہ حملوں کے باعث، اس علاقے کے بچوں کی ایک بڑی تعداد، نفسیاتی بیماریوں میں مبتلا ہو گئی ہے- قدسنا نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق غزہ کی نفسیاتی سلامتی کی کمیونٹی کے رکن "تیسر دیاب" نے کہا ہے کہ غزہ کے تقریبا پچاس فیصد بچے اور اکتیس فیصد بڑی عمر کے افراد، دو ہزار چودہ میں اس علاقے پر اسرائیل کے وحشیانہ حملوں کے سبب، نفسیاتی دباؤ اور اسٹریس کا شکار ہیں- تیسر دیاب نے کہا کہ تحققیات سے منظر عام پر آنے والے اعداد و شمار اور دستاویزات سےاس امر کی عکاسی ہوتی ہے کہ غزہ کے فلسطینی باشندوں کو نفسیاتی سلامتی سے متعلق خدمات تک دسترسی کی اشد ضرورت ہے- " سیو دی چلڈرن" تنظیم کی بھی تحقیق کے مطابق دربدری کی زندگی، بے روزگار ہونے کے ساتھ ساتھ صیہونیوں کی جانب سے تشدد اور نفسیاتی سلامتی کی خدمات محددو ہونا اس امر کا باعث بنا ہے کہ غزہ کے بچوں پر پچاس روزہ جنگ سے پیدا ہونے والا نفسیاتی دباؤ نہ صرف یہ کہ کم نہیں ہوا ہے بلکہ اس میں روز بروز اضافہ ہو رہا ہے- واضح رہے کہ دو ہزار چودہ میں غزہ پر غاصب صیہونی حکومت کے پچاس روزہ وحشیانہ حملوں میں، کم از کم بائیس سو فلسطینی شہید اور تیئیس سو کے قریب رہائشی مکانات مکمل طور پر تباہ ہو گئے تھے جبکہ ساڑھے تیرہ ہزار کے قریب رہائشی مکانات کو نقصان پہنچا تھا-


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Wed - 2018 Sep 26