Sunday - 2018 Nov 18
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 79348
Published : 25/7/2015 21:12

کینیڈا کے مقامی باشندوں کے ساتھ امتیازی سلوک، اقوام متحدہ کی نکتہ چینی

اقوام متحدہ کی کمیٹی برائے حقوق انسانی نے کینیڈا کی حکومت کو ہدف تنقید بناتے ہوئے کہا ہے کہ وہ ملک کے مقامی باشندوں پالیو انڈینز کی حمایت کرنے کے علاوہ ان کے خلاف امتیازی سلوک کا خاتمہ کرے- تسنیم نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق اقوام متحدہ کی کمیٹی برائے حقوق انسانی نے کہا ہے کہ کینیڈا کی حکومت کو چاہیے کہ اس ملک کے مقامی باشندوں پالیو انڈینز کے حقوق کے سلسلے میں مزید کوششیں بروئے کار لائے اور اس ملک کی مقامی خواتین اور بچوں کے خلاف امتیازی سلوک کا خاتمہ کرے- اس رپورٹ میں مزید کہا گیا ہے کہ کینیڈا کی حکومت کو چاہئے کہ مقامی باشندوں کو جیلوں میں ایذائیں پہنچانے کے مسئلے کا بھی حل نکالے اور ان کو علاج معالجے کی بہتر سہولیات مہیا کرے- کینیڈا کے بہت سے مقامی باشندے انتہائی ابتر حالات میں زندگی گذار رہے ہیں اور وہ پینے کے صاف پانی اور مناسب رہائش سے بھی محروم ہیں- یہ ایسی حالت میں ہے کہ ان کے درمیان منشیات کے استعمال اور خودکشی کی شرح میں روز بروز اضافہ ہو رہا ہے- کینیڈا کے چودہ لاکھ مقامی باشندے، اس ملک کی کل آبادی کا چار اعشاریہ تین فیصد حصہ ہیں- اقوام متحدہ کی کمیٹی برائے حقوق انسانی نے اسی طرح کینیڈا میں انسداد دہشت گردی کے نئے قانون کی منظوری پر تشویش ظاہر کی ہے- یہ قانون گذشتہ مہینے کینیڈا کی پارلمینٹ میں منظور کیا گیا- اس رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ اس قانون کے سبب حکومت کینیڈا کے اختیارات وسیع ہو گئے ہیں لیکن اس ملک کے باشندوں کے شہری اور سیاسی حقوق کو نظر انداز کیا جارہا ہے- اقوام متحدہ کی انسانی حقوق کمیٹی نے کینیڈا کے حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ اس قانون پر نظر ثانی کریں تاکہ انہیں اطمینان حاصل ہو جائے کہ یہ قانون، انسانی حقوق کے بین الاقوامی قوانین کے منافی نہیں ہے-


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Sunday - 2018 Nov 18