جمعه - 2019 مارس 22
ہندستان میں نمائندہ ولی فقیہ کا دفتر
Languages
Delicious facebook RSS ارسال به دوستان نسخه چاپی  ذخیره خروجی XML خروجی متنی خروجی PDF
کد خبر : 79786
تاریخ انتشار : 31/7/2015 10:43
تعداد بازدید : 4

افغان حکومت اور طالبان امن مذاکرات کا دوسرا دورملتوی

افغان حکومت اور طالبان کے درمیان امن مذاکرات کا دوسرا دور باضابطہ طور پر ملتوی کر دیا گیا ہے۔
ارنا کی رپورٹ کے مطابق پاکستانی وزارت خارجہ نے ایک بیان جاری کیا ہے۔ اس بیان میں آیا ہے کہ افغان طالبان کے سرغنہ ملا عمر کی ہلاکت پر مبنی خبروں کے منظر عام پر آنے اور اس خبر کی بنا پر بے یقینی کا ماحول پیدا ہونے کے پیش نظر اکتیس جولائی کو افغان حکومت اور طالبان کے درمیان مذاکرات کے دوسرے دور کو ملتوی کر دیا گیا ہے۔ بیان میں مزید آیا ہے کہ پاکستان سمیت افغانستان کے تمام دوست ممالک اس بات کی توقع رکھتے ہیں کہ طالبان کی قیادت افغانستان میں پائیدار امن کے قیام کے لئے امن مذاکرات کا سلسلہ جاری رکھے گی۔ بیان میں اس امید کا بھی اظہار کیا گیا ہے کہ افغان حکومت اور طالبان کے امن مذاکرات کو نقصان پہنچانے کی کوشش کرنے والے عناصر کو اپنے مقصد میں کامیابی حاصل نہیں ہو گی۔ دریں اثنا پاکستانی ذرائع ابلاغ نے خبر دی ہے کہ ملا اختر محمد منصور کو طالبان کا نیا لیڈر منتخب کر لیا گیا ہے ۔ ملا اختر محمد منصور کا شمار ان طالبان میں ہوتا ہے جو کابل حکومت کے ساتھ امن مذاکرات کے حامی ہیں۔


نظر شما



نمایش غیر عمومی
تصویر امنیتی :