Wed - 2018 Dec 19
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 80234
Published : 6/8/2015 21:1

شام کی بھرپور حمایت جاری رکھیں گے، صدر حسن روحانی

اسلامی جمہوریہ ایران کے صدر نے کہا ہے کہ دہشت گردی کا مقابلہ، دنیا کی ستم رسیدہ اقوام کی حمایت اور علاقے میں امن و استحکام کا قیام، ایران کے مستقل اہداف اور اصول ہیں۔
اسلامی جمہوریہ ایران کے صدر ڈاکٹر حسن روحانی نے بدھ کے روز شام کے وزیر خارجہ ولید المعلم سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ دہشت گردی کا مقابلہ، دنیا کی ستم رسیدہ اقوام کی حمایت اور علاقے میں امن و استحکام کا قیام، ایران کے مستقل اہداف اور اصول ہیں۔ صدر مملکت نے دہشت گردی کے مقابلے میں شامی عوام کی استقامت کی قدردانی کی۔ انہوں نے شام میں بعض ملکوں کی مداخلت اور دہشت گردوں کے اقدامات کو اس ملک میں بحران کے جاری رہنے کی اصل وجہ قرار دیا۔ ڈاکٹر حسن روحانی نے اس بات پر زور دیا کہ پوری دنیا کو دہشت گردی کی جانب سے شدید خطرہ لاحق ہے اور تمام ممالک اور حکومتوں کی ذمہ داری ہوتی ہے کہ اس لعنت کو جڑ سے اکھاڑ پھینکنے کے لئے متحدہ طور پر مقابلہ کریں۔ اسلامی جمہوریہ ایران کے صدر نے سیاسی طریقہ کار کو شام کے بحران کا واحد حل قرار دیا۔ انہوں نے کہا کہ شام کی مشکلات کے حل اور اس ملک میں امن و استحکام کی بحالی کے لئے ایران اپنی پوری سیاسی توانائی اور وسائل بروئے کار لائے گا۔ اس ملاقات میں شام کے وزیر خارجہ ولید المعلم نے بھی ایرانی عوام اور حکام کی جانب سے شامی عوام اور حکومت کی بھرپور حمایت کا شکریہ ادا کیا۔ انہوں نے کہا کہ شام کی صورتحال ماضی کے مقابلے میں بہت بہتر ہو چکی ہے اور سازش کرنے والے ممالک اب بالکل ناامید ہو گئے ہیں۔ ولید المعلم نے ایٹمی معاہدے اور ایٹمی مذاکرات میں حاصل ہونے والی کامیابیوں پر صدر مملکت کو مبارکباد پیش کرتے ہوئے ان کامیابیوں کو ایران کی منطقی پالیسیوں کا نتیجہ قرار دیا۔ انہوں نے اس بات پر بھی زور دیا کہ اس معاہدے سے علاقائی صورتحال پر مثبت اثرات مرتب ہوں گے۔


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Wed - 2018 Dec 19