دوشنبه - 2019 مارس 25
ہندستان میں نمائندہ ولی فقیہ کا دفتر
Languages
Delicious facebook RSS ارسال به دوستان نسخه چاپی  ذخیره خروجی XML خروجی متنی خروجی PDF
کد خبر : 80776
تاریخ انتشار : 16/8/2015 6:6
تعداد بازدید : 19

وہابی مدینہ میں سات مسجدوں کو منہدم کرنا چاہتے ہیں

سعودی عرب کی نام نہاد ممتاز علماء کونسل کے رکن نے انتہا پسند وہابیوں سے کہا ہے کہ مدینے کی سات مساجد کو منہدم کر دیں۔
العالم کی رپورٹ کے مطابق سعودی عرب کی نام نہاد ممتاز علماء کونسل کے رکن صالح فوزان نے دعوی کیا ہے کہ مدینے کی سات مسجدیں بدعت کی علامت ہیں اور انہیں ویران کئے جانے کی ضرورت ہے۔ واضح رہے کہ مدینے کی ان سات مسجدوں کی تاریخ، جنگ خندق تک جا پہنچتی ہے۔ یہ مساجد، مسجد نبوی کے مغرب میں کوہ سلع کے دامن میں واقع ہیں۔ ساری دنیا کے مسلمان ان مسجدوں کو بڑی اہمیت کی نگاہ سے دیکھتے ہیں اور ان میں نماز پڑھتے ہیں۔ حج و عمرے کی غرض سے سفر کرنے والے لوگ مدینے پہنچ کر سب سے پہلے ان مساجد میں ہی جاتے ہیں۔ واضح رہے کہ سعودی عرب میں بہت سے تاریخی اور اسلامی مقامات آل سعود کے دربار سے وابستہ نام نہاد مفتیوں کے فتوؤں کی بنا پر منہدم کردیئے گئے ہیں۔ وہابی، تکفیری اور سلفی گروہ مسلمانوں کو کافر قرار دینے کے علاوہ مقبروں، زیارتگاہوں اور اہل بیت اطہار علیھم السلام کی مسجدوں کو ڈھانے کا نظریہ رکھتے ہیں اور یہ ان کے اہم ترین نظریات میں شامل ہے کہ جن پر ان گروہوں نے عمل بھی کیا ہے۔


نظر شما



نمایش غیر عمومی
تصویر امنیتی :