Sunday - 2018 Nov 18
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 80787
Published : 16/8/2015 7:6

ایران کی پرامن ایٹمی سرگرمیاں جاری رہیں گی

اسلامی جمہوریہ ایران کے ایٹمی توانائی کے ادارے کے سربراہ نے کہا ہے کہ گروپ پانچ جمع ایک کے ساتھ ایٹمی معاہدے کی رو سے بعض محدودیتوں کے باوجود ایران کی پرامن ایٹمی سرگرمیاں بند نہیں ہوں گی- ہمارے نمائندے کی رپورٹ کے مطابق علی اکبر صالحی نے ہفتے کے روز ایک پریس کانفرنس میں ایران اور گروپ پانچ جمع ایک کے ایٹمی معاہدے کا جائزہ لیا۔ انہوں نے کہا کہ اس وقت ایران میں نو ہزار ایک سو سنٹری فیوج مشینیں کام کر رہی ہیں جو سال میں دو ٹن یورینیم کی افزودگی کا کام کر سکتی ہیں۔ ایران کے، ایٹمی توانائی کے ادارے کے سربراہ نے اس اعتراض کا جواب دیتے ہوئے کہ زیادہ سنٹری فیوج مشینیں کیوں نہں بنائی گئیں، کہا کہ ایٹمی صنعت کوئی ایسی صنعت نہیں ہے کہ مشین کا ایک نمونہ بنالیا جائے اور یہ کہا جائے کہ اسے بڑی تعداد میں تیار کر لیا گیا ہے بلکہ اس صنعت کی سیفٹی کے لئے خاص تدابیر اپنانی پڑتی ہیں تاکہ مطلوبہ مشینوں کو مکمل اعتماد کے ساتھ ایٹمی بجلی گھر کے سسٹم میں شامل کیا جا سکے۔ انھوں نے کہا کہ آٹھ سے دس سال کی مدت ایٹمی صنعت میں تحقیقات اور توسیع کے لئے مناسب ہے اور اس دوران ایران کے ایٹمی ثمرات کو مکمل پر حاصل کیا جا سکتا ہے اور رکاوٹوں کو دور نیز ایٹمی ایندھن بنانے کے لئے بین الاقوامی تعاون سے اس سائیکل کو مکمل کیا جا سکتا ہے۔


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Sunday - 2018 Nov 18