Monday - 2018 Dec 10
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 80974
Published : 18/8/2015 12:58

ایران اور روس کے وزرائے خارجہ کی پریس کانفرنس

اسلامی جمہوریہ ایران اور روس کے وزرائے خارجہ نے اعلان کیا ہے کہ دونوں ممالک شام کے بحران کا سیاسی حل تلاش کئے جانے پر اتفاق رائے رکھتے ہیں۔ فارس نیوز کی رپورٹ کے مطابق ایران کے وزیر خارجہ محمد جواد ظریف نے آج ماسکو میں روس کے وزیر خارجہ سرگئی لاوروف کے ساتھ مشترکہ پریس کانفرنس میں کہا ہے کہ علاقے کے تمام بحرانوں کو صرف سیاسی طریقے سے ہی حل کیا جاسکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ مشرق وسطی کی قوموں کو اپنی تقدیر کا فیصلہ خود کرنا ہو گا۔ محمد جواد ظریف نے اس مشترکہ پریس کانفرنس میں کہا کہ شام، عراق اور یمن کے بحران، علاقے کے ملکوں کے تعاون سے حل کئے جا سکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ بیرونی ملکوں کو دیگر ملکوں کے بارے میں فیصلہ کرنے کا کوئی حق حاصل نہیں ہے بلکہ انہیں چاہئے کہ وہ صرف آسانی پیدا کرنے اور مدد کرنے والے ملکوں کا کردار ادا کریں۔ ایران کے وزیر خارجہ نے تہران اور ماسکو کے مابین دو طرفہ تعلقات میں مزید فروغ لائے جانے کی ضرورت پر تاکید کرتے ہوئے کہا کہ ایٹمی مذاکرات کی کامیابی سے روس کے ساتھ تعلقات میں فروغ لانے کی زمین ہموار ہوئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ روس نے کٹھن حالات میں ایران کا ساتھ دیا ہے لہذا پابندیاں ختم ہونے کی صورت میں ایران کی نظر میں روس کا بہتر مقام ہو گا۔ اس مشترکہ پریس کانفرنس میں روسی وزیر خارجہ سرگئی لاوروف نے بھی کہا کہ شام کا بحران شامی گروہوں کے مذاکرات کے ذریعے حل ہونا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ اس سلسلے میں روس کا موقف تبدیل نہیں ہوا ہے اور بارہا کہا گیا ہے کہ شام کے عوام کو بغیر کسی بیرونی مداخلت اور پیشگی شرط کے، اپنی تقدیر کا فیصلہ کرنے کا موقع ملنا چاہئے۔ لاوروف نے محمد جواد ظریف کے ساتھ اپنے مذاکرات کو مثبت اور دوستانہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ روس، ایران کے ساتھ اپنے تجارتی تعلقات کو خاص اہمیت دیتا ہے۔


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Monday - 2018 Dec 10