Tuesday - 2018 Nov 13
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 81057
Published : 19/8/2015 16:0

شام کے بحران کےحل کی تجویز، شام کا مشروط اتفاق

شام کے وزیر خارجہ نے اپنے ملک کے بحران کے حل سے متعلق ہر طرح کی غیر ملکی تجویز کو مشروط طور پر قبول کرنے پر رضامندی ظاہر کی ہے- شام کے وزیر خارجہ ولید معلم نے لبنان سے شائع ہونے والے اخبار الجمہوریہ کے ساتھ گفتگو کے دوران کہا کہ دمشق حکومت اپنے ملک کے بحران کے حل سے متعلق ہر طرح کی غیر ملکی تجویز کو مشروط طور پر قبول کرنے کے لئے تیار ہے۔ ولید معلم نے شام کی ارضی سالمیت کے تحفظ، شامی جماعتوں کے درمیان مذاکرات اور ہر طرح کے سمجھوتے کے بارے میں ریفرینڈم کرائے جانے کو بحران شام سے متعلق ہر طرح کی غیر ملکی تجویز قبول کئے جانے کے سلسلے میں دمشق حکومت کی شرائط قرار دیا ہے۔ ولید معلم نے شام کے بحران کے حل سے متعلق ہر طرح کی تجویز قبول کرنے کے سلسلے میں اپنے ملک کے اٹل اصولوں کو پیش نظر رکھے جانے پر تاکید کرتے ہوئے کہا کہ ابھی دمشق حکومت کو شام کے بحران کے حل کے سلسلے میں کوئی نئی اور جامع تجویز موصول نہیں ہوئی ہے۔ شام کے وزیر خارجہ نے سعودی عرب کے وزیر دفاع محمد بن سلمان کے ساتھ اپنے ملک کی قومی سلامتی کے دفتر کے سربراہ علی مملوک کی ملاقات کی تردید یا تصدیق کئے بغیر کہا کہ استقامت کے سلسلے میں شام کی پالیسی میں کوئی تبدیلی واقع نہیں ہو گی۔ واضح رہے کہ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے پندرہ اراکین نے سترہ اگست کو شام کے امور میں اقوام متحدہ کے خصوصی نمائندے اسٹیفن ڈی میسٹورا کی تجویز کو منظور کیا۔ اس تجویز میں شام کے بحران کو مذاکرات کے ذریعے حل کرنے پر تاکید کی گئی ہے۔ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے بیان میں آیا ہے کہ شام کے بحران کا واحد حل دمشق کی قیادت میں ایک ایسے جامع سیاسی عمل سے عبارت ہے جس سے شام کے عوام کے جائز مطالبات پورے ہو سکتے ہوں۔


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Tuesday - 2018 Nov 13