سه شنبه - 2019 مارس 26
ہندستان میں نمائندہ ولی فقیہ کا دفتر
Languages
Delicious facebook RSS ارسال به دوستان نسخه چاپی  ذخیره خروجی XML خروجی متنی خروجی PDF
کد خبر : 81149
تاریخ انتشار : 22/8/2015 10:32
تعداد بازدید : 4

مشرقی افغانستان میں پاکستان کے حملوں پر کابل کی تشویش

افغانستان کی قومی سلامتی کونسل نے اپنے ملک کے مشرقی علاقوں پر پاکستان سے حملے جاری رہنے پر گہری تشویش ظاہر کی ہے-
موصولہ رپورٹ کے مطابق افغانستان کی قومی سلامتی کونسل کے پریس شعبے کے سربراہ نجیب منلائی نے کہا ہے کہ حکومت پاکستان، اس طرح کے حملے جاری رکھ کر افغان حکومت کو مذاکرات کی میز پر لانا اور پاکستان کے ساتھ ڈیورنڈ لائن کے بارے میں گفتگو کرنا چاہتی ہے- انھوں نے کہا کہ پاکستان، گذشتہ بیس برسوں سے افغانستان اور پاکستان کے درمیان ڈیورنڈ لائن کو تسلیم کرانا چاہتا ہے اور بہت سے سرحدی علاقوں میں اس نے اسی ڈیورنڈ لائن کو عبور کر کے تمام علامتوں کو افغانستان کے علاقوں کے اندر پہنچا دیا ہے- افغانستان کی قومی سلامتی کونسل کے پریس شعبے کے سربراہ کے بقول، پاکستان حتی محمد اشرف غنی پر دباؤ ڈالنا چاہتا ہے تاکہ کابل، اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں شکایت کرے اور پھر یہ کونسل ثالثی کرے اور اس طرح ، افغانستان اور پاکستان کے درمیان ڈیورنڈ لائن کو تسلیم کرالیا جائے تاہم افغانستان اسے ہرگز تسلیم نہیں کرے گا- قابل ذکر ہے کہ افغانستان کے صدر محمد اشرف غنی نے ابھی حال ہی میں اس سلسلے میں خبردار کیا ہے کہ کوئی بھی ملک، افغان حکومت کو دھمکی دے کر اپنے مطالبات مسلط نہیں کر سکتا-


نظر شما



نمایش غیر عمومی
تصویر امنیتی :