Thursday - 2018 August 16
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 81220
Published : 22/8/2015 21:3

وزارت خارجہ کی جانب سے، امریکی صدر کے دعووں کا جواب

ایران کی وزارت خارجہ کی ترجمان نے امریکی صدر کے مقالے میں اسلامی جمہوریہ ایران کے خلاف کئے جانے والے دعؤوں اور الزامات کو بے بنیاد قرار دیا ہے- ایران کی وزارت خارجہ کی ترجمان مرضیہ افخم نے ہفتے کے روز کہا ہے کہ صیہونی حکومت کے مفاد میں امریکی حکام کے تکراری دعوے، صیہونی لابی کی خوشنودی کے لئے، کئے جاتے ہیں جس سے اس بات کا پتہ چلتا ہے کہ امریکی حکام اپنے قومی مفادات کو ترجیح دینے کے سلسلے میں مکمل طرح سے پس و پیش میں مبتلا رہتے ہیں- ایران کی وزارت خارجہ کی ترجمان نے کہا کہ امریکہ کی خارجہ پالیسی اس ملک کی داخلی سیاسی رقابتوں کا شکار ہے- مرضیہ افخم نے کہا کہ امریکہ میں جنگ پسند ٹولے اور سفارت کاری کے دعوے داروں کی مشترکہ خصوصیت یہ ہے کہ یہ دونوں ہی ایک ایسی مبہم اور خطرناک حکمت عملی پر عمل پیرا ہیں جس نے اب تک دنیا کو نا قابل تلافی نقصانات پہنچائے ہیں اور اس وقت بھی وہ عالمی سطح پر بدامنی کی اصل وجہ بنے ہوئے ہیں- وزارت خارجہ کی ترجمان مرضیہ افخم نے تاکید کے ساتھ کہا کہ صیہونی حکومت، مشرق وسطی میں عدم استحکام اور دہشت گردی کا سب سے بڑا سرچشمہ ہے اور امریکہ کی مختلف حکومتوں کی جانب سے صیہونی حکومت کی کھلی حمایت، دہشت گرد گروہوں کی تشکیل، ان کی تربیت اور ان کے لئے اسلحے کی فراہمی نے امریکہ کو ملزم کے کٹہرے میں لاکھڑا کر دیا ہے- وزارت خارجہ کی ترجمان نے اس بات پر تاکید کرتے ہوئے کہ اسلامی جمہوریہ ایران سیاسی، فوجی اور سیکورٹی شعبوں میں اپنے دفاع کے سلسلے میں کسی طرح کی کوئی پابندی برداشت نہیں کرے گا، کہا کہ فوجی حملے کی دھمکی، اقوام متحدہ کے اصولوں اور منشور کے منافی ہے اور اس سلسلے میں امریکی حکومت اور حکام، پوری دنیا کے سامنے جواب دہ ہیں-


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Thursday - 2018 August 16