Wed - 2018 Oct. 17
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 81223
Published : 22/8/2015 21:11

حج ملت اسلامیہ کے اتحاد وعظمت کا مظہر: رہبرانقلاب اسلامی

رہبر انقلاب اسلامی نے حج کو اسلام کی بقا کا ضامن اور ملت اسلامیہ کے اتحاد و عظمت کا مظہر قرار دیا ہے۔ اسلامی جمہوریہ ایران کے حج و زیارات کے ادارے کے حکام نے ہفتے کے دن رہبر انقلاب اسلامی آیت اللہ العظمی سید علی خامنہ ای سے ملاقات کی۔ رہبر انقلاب اسلامی نے اس موقع پر حج کے عظیم فرض کے انفرادی اور اجتماعی پہلوؤں پر ایک ساتھ توجہ دیئے جانے پر تاکید کرتے ہوئے فرمایا کہ حج کے عظیم اجتماع کے موقع پر اتحاد پر منتج ہونے والے ایرانی قوم کے تجربات کا بیان کیا جانا ملت اسلامیہ کے اتحاد اور طاقت کا باعث بنے گا۔ رہبر انقلاب اسلامی نے حج کے اجتماعی پہلوؤں کی وضاحت کرتے ہوئے تمام تر نسلی، مذہبی، ثقافتی اور ظاہری اختلافات کے باوجود مکہ مکرمہ اور مدینہ منورہ میں تمام اقوام کی ایک ساتھ موجودگی کی جانب اشارہ کیا اور فرمایا کہ حج اسلامی اتحاد کا حقیقی موقع اور مظہر ہے۔ آیت اللہ العظمی سید علی خامنہ ای نے ان لوگوں کو تنقید کا نشانہ بنایا جو مختلف طریقوں منجملہ قومیت کو بڑھا چڑھا کر پیش کرنے کے ذریعے ملت اسلامیہ کی اہمیت کو گھٹانے کی کوشش کرتے ہیں۔ آپ نے فرمایا کہ حج ملت اسلامیہ کی تشکیل کا ایک بامعنی نمونہ اور دنیا بھر کے مسلمانوں کے اتحاد، ان کے یک زبان ہونے اور ان کے ساتھ ہمدردی کے اظہار کا بہت ہی عظیم موقع ہے۔ رہبر انقلاب اسلامی نے دشمنوں کی پہچان، دشمنوں پر اعتماد نہ کرنے نیز دوست کو دشمن اور دشمن کو دوست نہ سمجھنے سے متعلق ایرانی قوم کے موثر اور مفید تجربات کی جانب اشارہ کرتے ہوئے فرمایا کہ ایرانی عوام اس بات کو سمجھ چکے ہیں کہ عالمی سامراج اور صیہونزم ملت اسلامیہ کے حقیقی دشمن ہیں اور اسی وجہ سے وہ تمام قومی اور اسلامی اجتماعات اور مظاہروں میں امریکا اور صیہونزم کے خلاف نعرے لگاتے ہیں۔ رہبر انقلاب اسلامی نے بعض ممالک میں بعض اسلامی گروہوں کے برسر اقتدار آنے کے ناکام تجربے کی جانب اشارہ کرتے ہوئے فرمایا کہ ان گروہوں نے ایرانی قوم کے برخلاف دوست اور دشمن کی پہچان میں غلطی کی جس کی وجہ سے ان کو ناکامی کا سامنا کرنا پڑا۔ رہبر انقلاب اسلامی آیت اللہ العظمی سید علی خامنہ ای نے مزید فرمایا کہ سامراج کی مالی مدد کے ساتھ امریکا، یورپ، مقبوضہ فلسطین اور وابستہ ممالک میں دسیوں فکری اور سیاسی مرکز اور تھنک ٹینک اسلام اور شیعہ مذہب کے بارے میں تحقیقات انجام دے رہے ہیں تاکہ ملت اسلامیہ کو بیدار کرنے اور طاقتور بنانے والے اسباب کا قلع قمع کرنے کے طریقے ڈھونڈ کر ان کو عملی جامہ پہنا سکیں۔ رہبر انقلاب اسلامی نے بعض ممالک میں مذہبی، سیاسی حتی جماعتی بنیادوں پر ہونے والی لڑائیوں کو اتحاد کی نعمت کی ناشکری سے تعبیر کیا اور فرمایا کہ اگر لوگ اتحاد کی قدر سے آگاہ نہ ہوں تو وہ اختلافات اور لڑائی جھگڑے کا شکار ہو جاتے ہیں۔


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Wed - 2018 Oct. 17