Tuesday - 2018 Dec 11
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 81292
Published : 24/8/2015 7:51

میانمار میں مسلم مخالف مسودے کی منظوری، آسیان کی مذمت

جنوب مشرقی ایشیا کے ممالک کی تنظیم آسیان نے میانمار میں مسلمانوں کے خلاف نئے قوانین کی منظوری کی سختی سے مذمت کی ہے۔ رپورٹوں کے مطابق، میانمار کی پارلیمنٹ نے دو ایسے مسودوں کو قانونی حیثیت دی ہے جس میں مسلمانوں کی مذہبی آزادی کو نشانہ بنایا گیا ہے۔ اس قانون کے نفاذ سے عام انتخابات سے قبل کشیدگی اور مسلمانوں کے خلاف تشدد میں اضافہ بھی ہوسکتا ہے۔ اس مسودے کی منظوری پر آسیان تنظیم کے انسانی حقوق کے مرکز نے سخت برہمی کا اظہار کیا ہے۔ میانمار کی پارلیمنٹ میں منظور شدہ اس مسودے کے تحت مذہب کی تبدیلی اور متعدد شادیوں پر پابندی عائد کردی گئی ہے۔ نئے مسودے کے تحت جو لوگ اپنا مذہب تبدیل کرنا چاہتے ہیں، انہیں متعلقہ مقامی عہدے داروں سے تائید حاصل کرنی ہوگی۔ قابل ذکر ہے کہ جو لوگ اس قانون پر عمل کرنے سے گریز کریں گے انہیں دو سال تک قید کردیا جائے گا۔ میانمار کی پارلیمنٹ نے اس مسودے کو، نسل و مذہب کی نام نہاد حمایت کے قانون کے تحت منظور کیا ہے۔


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Tuesday - 2018 Dec 11