Tuesday - 2018 Dec 11
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 81304
Published : 24/8/2015 8:23

یورینیم کی افزودگی کا حق تسلیم کروانا اہم تھا

اسلامی جمہوریہ ایران کی پارلیمنٹ کے اسپیکر نے یورینیم کی افزودگی کا حق تسلیم کروانے کو ایٹمی مذاکرات کا اہم ہدف قرار دیا ہے۔ اسلامی جمہوریہ ایران کی پارلیمنٹ کے اسپیکر علی لاریجانی نے اتوار کے دن تہران میں ڈاکٹروں کے دن کی مناسبت سے منعقدہ ایک سیمینار میں تقریر کے دوران ایران اور گروپ پانچ جمع ایک کے درمیان ایٹمی معاہدے کی جانب اشارہ کیا اور کہا کہ ایٹمی مذاکرات کا اہم مقصد یورینیم کی افزودگی کا حق تسلیم کروانا تھا اور اب یہ حق تسلیم کر لیا گیا ہے۔ علی لاریجانی نے مزید کہا کہ یورپ والے ماضی میں اور مذاکرات کے دوران ایران میں یورینیم کی افزودگی کے حق کو تسلیم کرنے کے لئے تیار نہیں تھے لیکن ایرانی مذاکراتی ٹیم کی کوششوں سے انہوں نے ایران کے اس حق کو تسلیم کر لیا۔ اسلامی جمہوریہ ایران کی پارلیمنٹ کے اسپیکر نے ایران مخالف تمام پابندیاں ختم کیے جانے کی جانب اشارہ کیا اور کہا کہ ایران کوشش کر رہا ہے کہ تمام پابندیاں ایک ساتھ اٹھا لی جائیں اور وقت کے ساتھ ساتھ یقینا تمام پابندیاں اٹھا لی جائیں گی۔ ڈاکٹر علی لاریجانی نے یہ بات زور دے کر کہی کہ ایٹمی معاہدے کی دستاویزات کے بارے میں منفی باتیں نہیں کی جانی چاہییں۔ ڈاکٹر علی لاریجانی کا مزید کہنا تھا کہ بعض کمزوریوں کے باوجود مجموعی طور پر ایٹمی مذاکرات کا عمل اور یورینیم کی افزودگی پر مبنی ایران کا حق تسلیم کیا جانا ایک پسندیدہ امر اور اچھا ہدف ہے۔ اسلامی جمہوریہ ایران کی پارلیمنٹ کے اسپیکر علی لاریجانی نے ڈاکٹروں کے دن کی جانب اشارہ کرتے ہوئے بو علی سینا کو ایک عظیم عالم، محنتی شخصیت، دانشور اور فلسفی قرار دیا اور کہا کہ بو علی سینا نے طب کے علم میں نئے نظریات پیش کئے اور ان کی کتاب شفا نے طب کو نئے افکار و نظریات سے روشناس کرایا۔


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Tuesday - 2018 Dec 11