Saturday - 2018 Dec 15
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 81875
Published : 1/9/2015 14:21

بین الپارلیمانی یونین کے اجلاس سے ڈاکٹر علی لاریجانی کا خطاب

اسلامی جمہوریہ ایران کی پارلیمنٹ کے اسپیکر نے کہا ہے کہ بعض بڑی طاقتوں نے ایرانی قوم کو گھٹنے ٹیکنے پر مجبور کرنے کی کوشش کی لیکن ایران کی عظیم قوم نے استقامت اور ثابت قدمی کی بدولت کامیابی حاصل کی۔ نیویارک سے ہمارے نمائندے کی رپورٹ کے مطابق اسلامی جمہوریہ ایران کی پارلیمنٹ کے اسپیکر ڈاکٹر علی لاریجانی نے نیویارک میں بین الپارلیمانی یونین کے چوتھے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پائیدار ترقی کا انحصار سیاسی استحکام، جمہوریت اور متوازن اقتصادی ترقی پر ہے لیکن افسوس کہ سیاست پر طاقت نے قبضہ کر رکھا ہے اور جب تک یہی صورتحال رہے گی اس وقت تک دنیا میں تشدد، جنگ اور لوگوں کے بے گھر ہونے کا سلسلہ بھی جاری رہے گا۔
 ڈاکٹر علی لاریجانی کا کہنا تھا کہ بعض حکومتیں اپنے عوام کے لئے تو جمہوریت چاہتی ہیں لیکن وہ دوسرے ممالک کی آمر اور ظالم حکومتوں کی حمایت کرتی ہیں اور یہی حکومتیں ہتھیاروں اور مشین گنوں کے استعمال سے دوسرے ممالک میں جمہوریت قائم کرنا چاہتی ہیں۔ 
اسلامی جمہوریہ ایران کی پارلیمنٹ کے اسپیکر نے اس رویئے کو عصر حاضر کی بہت سی  جنگوں کا سبب قرار دیا اور فلسطین کے مظلوم عوام کی المناک صورتحال، صہیونی حکومت کی جنگ پسندی، عراق اور افغانستان کے خلاف لڑی جانے والی جنگوں اور ان ممالک پر قبضے ، جنگ یمن اور شام کی پانچ سالہ جنگ کو اس کی واضح مثالیں قرار دیا۔
 ڈاکٹر علی لاریجانی نے ایٹمی معاہدے کے نتائج کی جانب اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ ایٹمی معاہدے سے ایک بار پھر یہ بات ثابت ہو گئی ہے کہ دھونس اور دھمکیوں کی پالیسی کا کوئی فائدہ نہیں ہوتا ہے۔
 اسلامی جمہوریہ ایران کی پارلیمنٹ کے اسپیکر کا مزید کہنا تھا کہ بعض بڑی طاقتوں نے ایرانی قوم کو گھٹنے ٹیکنے پر مجبور کرنے کی کوشش کی لیکن ایران کی عظیم قوم نے استقامت کا مظاہرہ کیا اور کامیابی حاصل کی۔
 ڈاکٹر علی لاریجانی نے اپنی تقریر کے آخر میں کہا کہ ہم جمہوریت کو امن کی بنیاد سمجھتے ہیں اور کیا یہ بہتر نہیں ہے کہ ہم فلسطین کے مظلوم عوام کے لئے بھی یہی اصول اپنائیں تاکہ وہ بھی ایک ریفرینڈم کے ذریعے اپنی مرضی کی حکومت کا انتخاب عمل میں لا سکیں۔


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Saturday - 2018 Dec 15