Monday - 2018 Nov 19
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 83169
Published : 11/9/2015 13:15

داعش کی دہشت گردانہ اسٹریٹیجی کا انکشاف

دہشت گرد گروہ داعش کے قیدی بنائے گئے افراد نے، اس گروہ کی بعض خوفناک اور دہشت گردانہ پالیسیوں سے پردہ اٹھایا ہے- الحدث ٹی وی چینل کی رپورٹ کے مطابق داعش کے بعض سابق عناصر نے، جنہیں شام میں کردوں کی عوامی دفاعی فورسز نے قیدی بنایا ہے، اپنے اعترافات میں اس گروہ کی قتل و دہشت گردی کی اسٹریٹیجی اور بعض اسرار و رموز سے پردہ اٹھایا ہے- داعش کے ایک سابق رکن یاسر ملحم الطبل نے کہا کہ داعش گروہ، خودکش کاروائیاں کرنے کے لئے بچوں اور کم عمر لڑکوں کو استعمال کرتا ہے کہ جن کی عمریں پندرہ سال سے کم ہوتی ہیں- داعش کے ہاتھوں سے فرار ہونے اور کرد فورسز کے سامنے ہتھیار ڈالنے والے ایک چودہ سالہ نوجوان نے بھی کہا ہے کہ داعشی، بچوں اور کم عمر لڑکوں کو مختلف قسم کے ہتھیاروں کے استعمال پر مجبور کرتے ہیں اور ان کو سر کاٹنے کی ٹریننگ دیتے ہیں- اس نوجوان نے کہا کہ داعش کی جانب سے دی جانے والی تربیت کے دوران اسلام کا کہیں کوئی ذکر تک نہیں تھا- ایک اور داعشی قیدی "یمان ملجم التربہ" نے بھی اعتراف کیا ہے کہ جو جنگجو میدانوں میں زیادہ جوش و جذبے اور سنجیدگی کے ساتھ لڑتے ہیں انہیں پاداش اور انعام کے طور پر منشیات دی جاتی ہیں- داعش کا ایک اور سابق رکن، "ہادی صفوق" کہتا ہے کہ اس گروہ کے اصولوں میں بہت زیادہ تضاد پایا جاتا ہے اور ان کے اصولوں کا اسلام سے دور کا بھی تعلق اور واسطہ نہیں ہے- واضح رہے کہ داعش دہشت گرد گروہ نے اب تک علاقے کے بہت سے ملکوں خاص طور پر شام اور عراق میں بہت زیادہ ہولناک جرائم کا ارتکاب کیا ہے لیکن اس کے باوجود سعودی عرب، قطر اور ترکی جیسے ملکوں کی طرف سے اس کی بدستور مدد اور حمایت کی جا رہی ہے-


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Monday - 2018 Nov 19