Wed - 2018 Nov 21
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 83191
Published : 11/9/2015 20:29

پاکستانی اور ہندوستانی فوجی حکام کے مذاکرات

پاکستان اور ہندوستان کے فوجی حکام نے مختلف مسائل کے بارے میں مذاکرات انجام دیئے ہیں۔ پریس ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق پاکستان رینجرز اور ہندوستانی بارڈر سیکورٹی فورس کے حکام نے نئی دہلی میں مذاکرات کئے۔ ان مذاکرات میں حالیہ دنوں میں سرحدوں پر ہونے والی خونریز لڑائی اور جنگ بندی کی مسلسل خلاف ورزی کا جائزہ لیا گیا۔ پاکستانی اور ہندوستانی حکام نے پاکستان کی سرزمین سے شدت پسندوں کی در اندازی کی روک تھام کی نوعیت پر بھی تبادلہ خیال کیا۔ دونوں ممالک کے فوجیوں کے گشت کی تعداد اور باہمی اعتماد سازی کے لئے تدابیر اختیار کرنے کے بارے میں بھی بات چیت کی۔ پاکستان اور ہندوستانی فوجیوں کے درمیان ایسی حالت میں مذاکرات ہوئے ہیں کہ جب بدھ کے دن لائن آف کنٹرول پر دونوں ملکوں کے فوجیوں کے درمیان ہونے والے لڑائی میں دو ہندوستانی فوجی زخمی ہو گئے تھے۔ واضح رہے کہ ان مذاکرات میں پاکستان کے پندرہ رکنی وفد کی قیادت پاکستان رینجرز کے ڈائریکٹر میجر جنرل عمر فاروق برکی جبکہ ہندوستانی مذاکراتی ٹیم کی قیادت بی ایس ایف کے ڈائریکٹر جنرل ڈی کے پتھک نے کی۔ پاکستان رینجرز اور ہندوستانی بارڈر سیکورٹی فورس کے درمیان مذاکرات کا دور بارہ ستمبر تک جاری رہے گا۔ ادھر پاکستانی وزارت خارجہ کے ترجمان خلیل اللہ قاضی نے کہا ہے کہ نیویارک میں ہندوستان کے ساتھ کسی بھی سطح پر ملاقات کی تجویز زیر غور نہیں۔ ترجمان دفتر خارجہ خلیل اللہ قاضی نے کہا کہ ہندوستان کے ساتھ مذاکرات پر ہماری پوزیشن واضح ہے ، پاک و ہند مذاکرات میں کشمیر کے حوالے سے ضرور بات ہو گی۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ کشمیر متنازعہ علاقہ ہے۔ ہم مسئلہ کشمیر کا حل اقوام متحدہ کی قراردادوں کے تحت چاہتے ہیں۔ واضح رہے کہ پاکستان اور ہندوستان کے درمیان کشمیر سب سے بڑا متنازعہ مسئلہ ہے اور دونوں ملکوں کے درمیان ہونے والی تین جنگوں میں سے دو جنگیں مسئلہ کشمیر کی وجہ سے ہی ہوئی تھیں۔


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Wed - 2018 Nov 21