Monday - 2018 Nov 19
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 84474
Published : 3/10/2015 18:7

منٰی کا سانحہ قضا و قدر نہیں تھا، ہیومن رائٹس کمیشن کے سیکریٹریٹ

ہیومن رائٹس کمیشن نے سانحہ منٰی کو عصر حاضر میں انسانیت کے خلاف رونما ہونے والا سب سے بڑا جرم قرار دیا ہے۔ روئٹرز کی رپورٹ کے مطابق ہیومن رائٹس کمیشن کے سیکریٹریٹ نے جمعے کے دن ایک بیان جاری کرکے اعلان کیا ہے کہ نہایت ٹھوس اور واضح دلیلوں سے یہ بات ثابت ہوچکی ہے کہ منٰی کا سانحہ قضا و قدر نہیں تھا بلکہ ایک ہولناک جرم تھا جس کی وجہ سے سر شرم سے جھک گئے ہیں۔
 اس بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ اس المناک واقعے کی حقیقیت کا اس وقت گہرائی سے علم ہوتا ہے کہ جب بیت اللہ الحرام اور ماہ حرام میں دنیا کے مختلف کونوں سے آئے ہوئے حجاج کو نشانہ بنایا گیا کہ جو سر زمین وحی پر فریضہ الہی ادا کر نے کے لئے آئے ہوئے تھے۔
 ہیومن رائٹس کمیشن کے سیکریٹریٹ نے اپنے اس بیان میں تاکید کرتے ہوئے کہا ہے کہ لاپتہ ہوجانے والے افراد کے بارے میں بات بہت عجیب ہے، کیونکہ یہاں کوئی زلزلہ نہیں آیا کہ جس کی وجہ سے لوگ ملبے تلے دب کر غائب ہوجائیں۔ ہیومن رائٹس کمیشن کے بیان میں مزید کہا گيا ہے یہ سوال پوچھنا ضروری ہے کہ سیکڑوں کی تعداد میں یہ افراد کہاں غائب ہو گئے ہیں۔
 قابل ذکر ہے کہ منٰی کے المناک سانحے میں ہزاروں افراد جاں بحق اور زخمی ہو گئے جن میں چارسو چونسٹھ ایرانی بھی شامل ہیں۔


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Monday - 2018 Nov 19