Tuesday - 2018 Nov 13
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 84547
Published : 4/10/2015 19:11

سیکڑوں دہشت گردوں نے شامی فوج کے سامنے ہتھیار ڈال دیئے

شام میں سیکڑوں دہشت گردوں نے ہتھیار زمین پر رکھ کے خود کو شامی فوج کے حوالے کردیا ہے۔ تازہ رپورٹ کے مطابق جمعے کے دن شہر حلب کے نزدیک روس کے جنگی طیاروں کے حملے میں داعش کا ایک تربیتی کیمپ مکمل طور پر تباہ ہوگیا۔ اسی طرح شام کے علاقے حسکہ میں دہشت گردوں کے خلاف روس کی فضائی کارروائی میں دہشت گردوں کا ایک مرکز تباہ ہوگیا اور بہت سے دہشت گرد مارے گئے۔ روسی ذرائع کے مطابق شام کے صوبہ حمص کے شہر القریتین میں بھی دہشت گردوں کے ٹھکانوں پر بمباری کی گئی ہے۔ روسی ذرائع کے مطابق جمعرات کی رات، انجام پانے والی اس فضائی کارروائی میں بہت سے دہشت گرد ہلاک ہوئے ہیں۔ شہر القریتین پر داعش نے اگست سے قبضہ کررکھا ہے۔ اسی طرح شام کے شہر الرقہ کے مغربی مضافات میں روسی طیاروں کے حملے میں کم سے کم بارہ دہشت گرد ہلاک ہوئے ہیں۔ دوسری طرف حمص کے مضافات میں شامی فوج کے حملے میں بھی بہت سے تکفیری دہشت گرد وں کے ہلاک ہونے کی رپورٹ ہے۔ شام کے فوجیوں نے اسی طرح ادلب کے مضافات میں دہشت گردوں کے ٹھکانوں پر وسیع حملہ کیا ہے۔ ایک اور رپورٹ کے مطابق لاذقیہ میں شام کی فوج اور عوامی رضاکار فورس کے جوانوں کے حملے میں کم سے کم اٹھارہ دہشت گرد ہلاک ہوگئے ہیں ۔
ادھر داعش نے اعلان کیا ہے کہ اردن کے ایک رکن پارلیمنٹ کا بیٹا ایک آپریشن کے دوران ماراگیا ہے ۔ داعش نے اعلان کیا ہے کہ اردن کے ایک رکن پارلیمنٹ کا تیئس سالہ بیٹا محمد الضلاعین داعش میں شامل ہوگیا تھا۔ اردن کے ایک سیاستداں کا یہ بیٹا یوکرین میں تعلیم حاصل کررہا تھا اور چند ماہ قبل ترکی کی سرحد میں شام میں داخل ہوکے داعش میں شمولیت اختیار کی تھی ۔
دوسری طرف شام کے علاقے الحسکہ کے میں عوام نے داعش سے مقابلے کے لئے اپنی مکمل آمادگی کا اعلان کیا ہے۔
حسکہ کے گورنر محمد زعال العلی نے جمعے کو ایک انٹرویو میں بتایا ہے کہ اطلاع ملی ہے کہ داعش حسکہ پر حملہ کرنا چاہتا ہے جس کے پیش نظر عوام نے داعش گردوں کا مقابلہ کرنے کے لئے اپنی پوری آمادگی کا اعلان کیا ہے ۔ انھوں نے بتایا ہے اس وقت حسکہ میں دفاعی دستوں کو پوری طرح چوکس رہنے کے احکامات صادر کردیئے گئے ہیں ۔ انھوں نے بتایا کہ دفاعی دستوں میں شام کی فوج کے ساتھ عوامی رضاکار فورس کے جوان بھی شامل ہیں۔
دوسری طرف امریکی وزارت جنگ پنٹاگون نے اعلان کیا ہے کہ شام میں روس کےہوائی حملے جاری رہنے کی صورت میں امریکا روسی فوج کے خلاف طاقت کا استعمال کرنے پر مجبور ہوگا - امریکی وزارت جنگ پنٹاگون کا کہنا ہے کہ امریکا نے شامی حکومت کے جن مخالفین کو ٹریننگ دی ہے اگر ان کےخلاف روس کے خطرات سنگین ہوتے ہیں تو ایسی صورت میں فوجی طاقت کا استعمال کیا جائے گا- اس درمیان یہ بھی کہا جارہا ہے کہ امریکی وزیرجنگ ایشٹن کارٹر نے اس سلسلے میں کچھ کہنے سے گریز کیا ہے -
پینٹاگون نے یہ دھمکی ایسی حالت میں دہی ہے کہ روس شام کے اندردہشت گردوں کے ٹھکانوں پردمشق حکومت کی ہم آہنگی سے حملے کررہا ہے - اورروس کے یہ حملے پوری طرح قانونی اور جائزہیں -


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Tuesday - 2018 Nov 13