يکشنبه - 2019 مارس 24
ہندستان میں نمائندہ ولی فقیہ کا دفتر
Languages
Delicious facebook RSS ارسال به دوستان نسخه چاپی  ذخیره خروجی XML خروجی متنی خروجی PDF
کد خبر : 86694
تاریخ انتشار : 6/11/2015 19:1
تعداد بازدید : 15

یمن پر سعودی جارحیت کا سلسلہ جاری ہے

یمن کے مختلف علاقوں پر سعودی حکومت کے وحشیانہ حملوں کا سلسلہ جمعرات کو بھی جاری رہا۔ اسی کے ساتھ یمن کے جوابی حملوں میں متعدد سعودی فوجیوں کےہلاک اور زخمی ہونے کی خبر ہے۔
یمن کی فوج اور عوامی رضاکار فورس نے اسی کے ساتھ بڑی تعداد میں سوڈانی ایجنٹوں کو گرفتار کرلیا ہے۔ یمن کے المسیرہ ٹی وی کے مطابق جمعرات کو جنوبی شہر تعز پر سعودی اتحاد کے جنگی طیاروں کی بمباری میں گیارہ سے زائد عام شہری شہید ہوگئے ۔ 

اس رپورٹ کے مطابق سعودی جنگی طیاروں نے جمعرات کو شمالی یمن کے صوبہ صعدہ پر بھی کئی بار بمباری کی جس میں بہت سے لوگوں کے شہید ہونے کے ساتھ ہی کئی عمارتوں کو کافی نقصان پہنچنے کی بھی اطلاع ہے ۔ اس رپورٹ کے مطابق صعدہ کے علاقے ال السیف میں ٹیلی کمونیکیشن کی ایک عمارت پرسعودی جنگی طیاروں نے چار بار بمباری کی ہے۔

دوسری طرف یمن کی فوج اور عوامی رضاکار دستوں نے سعودی جارحیت کے جواب میں سرحدی علاقوں میں سعودی فوجی مراکز پر میزائل داغے اور توپوں سے گولہ باری کی ۔ یمن کے جوابی حملوں میں متعدد سعودی فوجیوں کے ہلاک اور زخمی ہونے کی خبر ہے۔ اس رپورٹ کے مطابق صوبہ جیزان کے علاقے المعنق کے نزدیک ایک سعودی فوجی اڈے پر یمن کے جوابی حملے میں کئی سعودی فوجی ہلاک ہوگئے ہیں۔

اسی کے ساتھ جیزان ، نجران اور عسیر میں سعودی فوجیوں سے یمن کے فوجیوں اور عوامی رضاکار دستوں کے جوانوں کی جنگ میں شدت کی خبر ہے۔ یمنی ذرائع کے مطابق ان سیکٹروں پر جمعرات کی صبح سے ہی لڑائی شروع ہوئی جو آخری اطلاع ملنے تک جاری تھی۔ المسیرہ کے مطابق مذکورہ تینوں سیکٹروں پر یمنی جوانوں نے سعودی فوج کو بھاری جانی اور مالی نقصان پہنچایا ہے۔

العالم نے بھی رپورٹ دی ہے کہ جمعرات کو صنعا کے علاقے بلادالروس میں یمن کی فوج اور عوامی رضاکاروں کے فضائی دفاعی دستے نے سعودی حکومت کا ایک جنگی طیارہ مار گرایا ہے۔ ایک اور رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ یمنی فوج اور عوامی رضاکار فورس کے جوانوں نے پیسے لے کر جنگ کے لئے یمن آنے والے متعدد غیر ملکی ایجنٹوں کو گرفتار کرلیا ہے۔ یمن کے المسیرہ ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق گرفتار ہونے والے افراد زیادہ تر سوڈان اور ایتھوپیا سے تعلق رکھتے ہیں۔

سعودی حکومت مختلف ممالک کے افراد کو گمراہ کرکے اور پیسے دے کر یمنی فوج اور رضاکارفورس سے لڑنے کے لئے یمن بھیجتی ہے۔ سعودی حکومت نے افریقی مسلح افراد کے علاوہ امریکا کی بدنام زمانہ سیکورٹی کمپنی بلیک واٹر کے افراد کو بھی یمن میں جنگ کے لئے مامور کیا ہے۔

واضح رہے کہ بین الاقوامی قانونی اداروں نے سوڈان کے صدر عمر البشیر پر جنگی جرائم کے الزامات عائد کئے ہیں اور سوڈان نے عمر البشیر کے خلاف قانونی چارہ جوئی نہ ہونے دینے کے سلسلے میں سعودی مدد کے عوض کئی ہزار سوڈانی ایجنٹوں کو جنگ میں سعودی حکومت کی مدد کے لئے یمن بھیجا ہے۔


نظر شما



نمایش غیر عمومی
تصویر امنیتی :