يکشنبه - 2019 مارس 24
ہندستان میں نمائندہ ولی فقیہ کا دفتر
Languages
Delicious facebook RSS ارسال به دوستان نسخه چاپی  ذخیره خروجی XML خروجی متنی خروجی PDF
کد خبر : 86703
تاریخ انتشار : 7/11/2015 7:40
تعداد بازدید : 11

شام: داعش مسٹرڈ گیس کے حملوں میں ملوث

کیمیاوی ہتھیاروں کے استعمال پر پابندی کی تنظیم نے کہا ہے کہ اس تنطیم کے کیمیاوی ہتھیاروں کے ماہرین کی تحقیقات سے یہ بات ثابت ہوگئی ہے کہ دہشت گرد گروہ داعش نے شام میں اگست کے مہینے میں جنگ کے دوران مسٹرڈ گیس استعمال کی تھی۔

کیمیاوی ہتھیاروں کے استعمال پر پابندی کی تنظیم کی انتیس اکتوبر کی رپورٹ کے مطابق، کہ جو روئٹرز کے ہاتھ لگی ہے، اس بات کا پورا یقین ہو گیا ہے کہ حلب کے شمال میں واقع ماریہ شہر میں اکیس اگست دو ہزار پندرہ کو کم از کم دو افراد مسٹرڈ گیس کا شکار ہوئے۔

رپورٹ میں آیا ہےکہ اس بات کا قوی امکان ہے کہ اس گیس کی وجہ سے ہی شام کا ایک بچہ اپنی جان سے ہاتھ دھو بیٹھا۔

کیمیاوی ہتھیاروں کے استعمال پر پابندی کی تنظیم او پی سی ڈبلیو کی یہ رپورٹ اپنے کیمیاوی مواد کے ذخائر کی نابودی سے متعلق شام کی حکومت کے سمجھوتے کے بعد اس ملک میں مسٹرڈ گیس کے استعمال کا اولین ثبوت ہے۔

یہ رپورٹ نومبر کے اواخر میں باضابطہ طور پر اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل بان کی مون کو پیش کر دی جائے گی۔ جس کی بنا پر دہشت گرد گروہ داعش کی کیمیاوی ہتھیاروں تک رسائی اور عراق اور شام میں اس گروہ کی جانب سے ان ہتھیاروں کے استعمال سے متعلق اقوام متحدہ کے ثبوتوں میں اضافہ ہو جائے گا۔

عراق کے علاقے کردستان کے عوام نے گزشتہ مہینے کہا تھا کہ دہشت گرد گروہ داعش نے اگست کے مہینے میں مسٹرڈ گیس کے حامل مارٹر گولے شمالی عراق میں کرد پیشمرگہ فورس کے اہلکاروں پر داغے تھے۔


نظر شما



نمایش غیر عمومی
تصویر امنیتی :