پنج شنبه - 2019 مارس 21
ہندستان میں نمائندہ ولی فقیہ کا دفتر
Languages
Delicious facebook RSS ارسال به دوستان نسخه چاپی  ذخیره خروجی XML خروجی متنی خروجی PDF
کد خبر : 86803
تاریخ انتشار : 8/11/2015 9:42
تعداد بازدید : 13

کراچی اور چابہار کے درمیان فیری سروس شروع کرنے پر ایران اور پاکستان کا اتفاق

ایران اور پاکستان نے سمندری راستے سے سفر کے لیے فیری سروس شروع کرنے کے معاملات کو حتمی شکل دے دی ہے۔

میڈیا رپورٹوں کے مطابق فیری سروس کراچی کی بندرگاہ سے ایران کی بندرگاہ چابہار کے درمیان چلائی جائے گی اور اس کا کرایہ بیس ہزار پاکستانی روپے ہو گا۔ پبلک پرائیویٹ پارٹنر شپ کے تحت چلائی جانے والی فیری سروس کراچی سے چابہار تک، تین سو سینتالیس کلومیٹر کا فاصلہ چودہ گھنٹے میں طے کرے گی۔ ہر فیری کے ذریعے ڈھائی سو سے چار سو مسافر ایران کا سفر کر سکیں گے۔

پاکستان کی وزارت جہاز رانی نے اکتوبر دو ہزار چودہ میں زائرین کی سہولت کے لیے کراچی اور چابہار کے درمیان فیری سروس شروع کرنے کا اعلان کیا تھا لیکن اب اسے تجارتی مقاصد کے لیے بھی استعمال کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ 

پاکستان کے صوبہ بلوچستان میں ایرانی سرحدوں کے قریب امن و امان کی خراب صورتحال اور زائرین کی بسوں پر دہشت گردوں کے پے در پے حملوں کے بعد حکومت پاکستان نے سمندری راستے سے زائرین کو ایران بھیجنے کی تجویز پیش کی تھی۔ پاکستان کے صوبہ بلوچستان کے محکمہ داخلہ کا کہنا ہے کہ سات سو کلومیٹر طویل راستے پر مکمل سیکورٹی فراہم کرنا انتہائی مشکل کام ہے۔ 

قابل ذکر ہے کہ کوئٹہ تفتان شاہراہ پر ایران جانے والے زائرین کی بسوں پر دہشت گردوں کے حملوں میں سیکڑوں بےگناہ زائرین شہید اور زخمی ہو چکے ہیں۔


نظر شما



نمایش غیر عمومی
تصویر امنیتی :