Tuesday - 2018 Nov 20
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 89344
Published : 15/12/2015 18:51

سعودی عرب کی جانب سے دہشت گردی مخالف فوجی اتحاد قائم کرنے کا اعلان

سعودی عرب نے چونتیس اسلامی ملکوں پر مشتمل دہشت گردی مخالف فوجی اتحاد قائم کرنے کا اعلان کیا ہے۔

منگل کے روز سعودی ٹی وی سے نشر ہونے والے سرکاری بیان میں کہا گیا ہے کہ پاکستان، ملائیشیا، مصر، قطر، متحدہ عرب امارات اور ترکی سمیت، براعظم افریقہ اور خلیج فارس کے چونتس اسلامی ممالک اس اتحاد میں شامل ہوں گے۔

بیان میں دعوی کیا گیا ہے کہ مذکورہ ملکوں نے سعودی عرب کی قیادت میں دہشت گردی مخالف فوجی اتحاد کے قیام کا فیصلہ کیا ہے ۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ مذکورہ اتحاد کا مشترکہ آپریشن سینٹر ریاض میں قائم ہوگا جو دہشت گردی کے خلاف تمام کاروائیوں میں ہم آہنگی اور لاجسٹک سپورٹ فراہم کرنے کا ذمہ دار ہوگا۔

سعودی ٹی وی سے جاری ہونے والے بیان میں دعوی کیا گیا ہے کہ اسلامی ملکوں کو ، کسی بھی نام اور فرقے کی بنیاد پر، بے گناہوں کے قتل عام اور ان کے درمیان خوف و ہراس پھیلانے والے دہشت گرد گروہوں اور تنظیموں کے وجود سے پاک کرنا اس اتحاد کی ذمہ داری ہوگی۔

اس اعلان کے بعد سعودی عرب کے وزیر دفاع محمد بن سلمان نے پیر کی رات ایک پریس کانفرنس کے دوران کہا کہ یہ اتحاد عراق، شام ، لیبیا، مصر اور افغانستان میں دہشت گردی گے خلاف اپنے اقدامات میں ہم آہنگی پیدا کرے گا۔

تاہم انہوں نے اس جانب کوئی اشارہ نہیں کیا کہ یہ ہم آہنگی کس طرح ہوگی۔

انہوں نے کہا کہ ہم یہ کام اس اتحاد میں شامل ملکوں کی مشارکت اور عالمی برادری کی ہم آہنگی کے بغیر انجام نہیں دے سکتے۔

سعودی وزیر دفاع نے کہا کہ مذکورہ فوجی اتحاد تکفیر ی دہشت گرد گروہ داعش سمیت ہر دہشت گرد گروہ کا مقابلہ کرے گا۔

سعودی عرب کے وزیر دفاع نے دہشت گردی کے خلاف مذکورہ فوجی اتحاد قائم کرنے کا اعلان ایسے وقت میں کیا ہے جب اکثر مبصرین کا خیال ہے کہ سعودی عرب ،عراق اور شام میں دہشت گردوں کی بھرپور مالی حمایت کرنے والا اہم ملک شمار ہوتا ہے۔


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Tuesday - 2018 Nov 20