Wed - 2018 Nov 21
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 89462
Published : 16/12/2015 19:44

ایران کا ایٹمی کیس جعلی تھا جو ہمیشہ کے لیے ختم ہوگیا: ایران کی ایٹمی توانائی کے ادارے کے سربراہ

ایران کے ایٹمی توانائی کے قومی ادار ے کے سربراہ نے کہا ہے کہ ایران کا ایٹمی کیس جعلی تھا جو ہمیشہ کے لیے ختم ہوگیا ہے۔

آئی ای اے ای کے بورڈ آف گورنرز میں ایران کی ایٹمی سرگرمیوں میں فوجی مقاصد کی جانب ممکنہ انحراف یا پی ایم ڈی کیس بند ہونے پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے ڈ اکٹر علی اکبر صالحی نے کہا کہ یہ کیس جعلی تھا۔

انہوں نے کہا کہ آج کے بعد سے ایٹمی توانائی کا عالمی ادارہ جامع ایٹمی معاہدے کے بنیاد پر ایران میں آئندہ کی ایٹمی سرگرمیوں کی نگرانی کرے گا۔ ڈاکٹر علی اکبر صالحی نے آئی اے ای اے کے سربراہ یوکیا آمانو کے اس بیان کو بورڈ آف گورنرز کی قرارداد سے متصادم قرار دیا جس میں انہوں نے کہا تھا کہ ایران کے ایٹمی کیس میں بہت سے خاکستری یا گرے نکات اب باقی ہیں۔

ایران کے ایٹمی توانائی کے قومی ادارے کے سربراہ نے کہا کہ یہ بیان یوکیا آمانوں کی ذاتی رائے ہوسکتی ہے کیونکہ اگر ایسا ہوتا تو عالمی ادارہ ہر گز یہ نہ کہتا ہے کہ ہمیں ایران میں انجام پانے والی سیمپلنگ کے دوران کچھ نہیں ملا اور کھل کر ایران کے بری ہونے کا اعلان بھی نہ کرتا۔

قابل ذکر ہے کہ آئی اے ای اے کے بورڈ آف گورنرز نے منگل پندرہ دسمبر کو ایک قرارداد کے ذریعے ایران کی ایٹمی سرگرمیوں میں فوجی مقاصد کی جانب ممکنہ انحراف کے بارے میں کیس ختم کرنے کا اعلان کر دیا ہے۔

اس قرار داد کی رو سے ایران کی ماضی اور حال کی ایٹمی سرگرمیوں کے بارے میں تمام معاملات حل ہوگئے ہیں اور پی ایم ڈ ی کے دعووں کی بیناد پر قائم کیس بند کر دیا گیا ہے۔


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Wed - 2018 Nov 21