پنج شنبه - 2019 مارس 21
ہندستان میں نمائندہ ولی فقیہ کا دفتر
Languages
Delicious facebook RSS ارسال به دوستان نسخه چاپی  ذخیره خروجی XML خروجی متنی خروجی PDF
کد خبر : 90186
تاریخ انتشار : 28/12/2015 10:37
تعداد بازدید : 4

پاکستان کے آرمی چیف کا دورۂ افغانستان

پاکستان کے آرمی چیف نے افغان حکومت اور طالبان کے درمیان مذاکراتی عمل کو آگے بڑھانے کی کوششوں کے تحت کابل کا دورہ کیا ہے۔
پاکستانی فوج کے ترجمان جنرل عاصم سلیم باجوہ نے اتوار کو بتایا کہ پاکستان کے آرمی چیف جنرل راحیل شریف سرحدوں پر بہترطریقےسےامن قائم کرنے اور افغانستان میں قیام امن کے عمل کو آگے بڑھانے کی غرض سے پوری نیک نیتی اور سچے جذبے کے ساتھ کابل گئے ہیں - انہوں نے بتایا کہ جنرل راحیل شریف کا یہ ایک روزہ دورہ ہے -یادرہے کہ افغانستان میں نئی حکومت آنے اور اشرف غنی کے صدر بننےکے بعد ابتدائی دنوں میں افغانستان اور پاکستان کے تعلقات بہتر ہوئے تھے لیکن کابل میں سلسلہ وار بم دھماکوں اور دہشت گردانہ حملوں کے بعد دونوں ملکوں کے تعلقات دوبارہ کشیدہ ہوگئے - افغان صدر اور بعض دیگر افغان حکام نے کابل میں دہشت گردانہ حملوں کا ذمہ دار پاکستانی طالبان کو قرار دیا تھا - اس درمیان پاکستانی ذرائع ابلاغ نے بھی کہا ہے کہ جنرل راحیل شریف کے دورہ افغانستان کا مقصد افغان حکومت اور طالبان کے درمیان مذاکرات کو دوبارہ شروع کراناہے - افغان حکومت اور طالبان کے نمائندوں کے درمیان مذاکرات کا پہلا دور جولائی میں اسلام آباد میں ہوا تھا جس میں چین اور امریکا کے نمائندوں نے بھی شرکت کی تھی -مگربعد میں اسلام آباد اور کابل کے تعلقات کشیدہ ہوجانے کے بعد مذاکرات کا دوسرا دور انجام نہ پاسکا - راحیل شریف نے کابل پہنچنے کے فورا بعد افغان صدر اشرف غنی سے ملاقات کی - ان کے ساتھ آئی ایس آئی کے سربراہ جنرل رضوان اختر اور پاکستانی فوج کے ترجمان جنرل عاصم سلیم باجوہ بھی کابل گئے -


نظر شما



نمایش غیر عمومی
تصویر امنیتی :