سه شنبه - 2019 مارس 19
ہندستان میں نمائندہ ولی فقیہ کا دفتر
Languages
Delicious facebook RSS ارسال به دوستان نسخه چاپی  ذخیره خروجی XML خروجی متنی خروجی PDF
کد خبر : 90187
تاریخ انتشار : 28/12/2015 10:41
تعداد بازدید : 3

روسی صدر ولادی میر پوتن نے ملک کے اہم ساحلی علاقوں میں دہشت گردی کے خلاف خصوصی آپریشن سینٹر قائم کرنے کا حکم دے دیا

روس نے کیسپیئن سی، جزیرہ کریمہ، مشرق بعید اور شمالگان سمیت ملک کے اہم ساحلی علاقوں میں انسداد دہشت گردی کے خصوصی آپریشن مراکز قائم کرنے کا اعلان کیا ہے۔

روس کے صدر ولادی میر پوتن نے حکم دیا ہے کہ ملک کے اہم ساحلی علاقوں میں دہشت گردی کے خلاف خصوصی آپریشن سینٹر قائم کئے جائیں، کریملن کے اعلان کے مطابق یہ مراکز، کیسپیئن سی کے علاقے کاسپک ، شمال مغربی روس کے علاقے مورمانسک اورمشرقی ساحلی علاقوں پیترو پاؤلووسک- کامچاتسکی ، اور یوژنو- ساخالنسک میں قائم کئے جائیں گے۔

صدر پوتن نے حکم دیا ہے کہ ایسا ہی ایک مرکز جزیرہ نمائے کریمہ کے مرکز کے شہر سیمفروپول میں بھی قائم کیا جائے۔ صدر پوتن کے دستخط کے ساتھ جاری ہونے والے حکم نامے کے مطابق ساحلی علاقوں میں ایسے آپریشن سینٹروں کے قیام کا مقصد انسداد دہشت گردی فورس کو وفاقی ہماہنگی کے تحت فعال بنانا ہے۔ یہ مراکز ملک کے دوسرے ساحلی علاقوں میں بھی انسداد دہشت گردی کی کارروائیاں انجام دے سکیں گے اور ان کا مقصدروس کے اقتدار اعلی پر تاکید کے علاوہ روسی پرچم لہرانے والے بحری جہازوں کا تحفظ بھی کرنا ہے۔

مشرق وسطی میں داعش اور دیگر دہشت گرد گروہوں کی بڑھتی ہوئی سرگرمیوں اور ان میں روسی شہریوں کی شمولیت کے پیش نظر، روس کے سیاسی اور سیکورٹی حکام کا خیال ہے کہ ملک میں دہشت گردانہ حملوں کے خطرات میں اضافہ ہوگیا ہے اور خاص طور سے ایسے حملے ملک کے دورافتادہ ساحلی علاقوں سے کئے جاسکتے ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ روس نے ساحلی علاقوں میں دہشت گردی کی روک تھام کی غرض سے ملک کے ساحلی علاقوں میں بھی خصوصی آپریشن مراکز پرتوجہ دینا شروع کردی ہے۔

یہاں اس بات کا ذکر بھی ضروری ہے کہ داعش اور دیگر تکفیری دہشت گرد گروہوں میں شامل روسی شہریوں کی تعداد تین سے سات ہزار کے درمیان بتائی جاتی ہے


نظر شما



نمایش غیر عمومی
تصویر امنیتی :