Monday - 2018 June 25
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 90200
Published : 28/12/2015 11:13

ایک شام نائیجیریا کے مظلوموں کے نام

ہندوستان کی ریاست اترپردیش کے دار الحکومت لکھنؤ میں نائیجیریا کے مظلوم مسلمانوں کی حمایت میں " ایک شام نائیجیریا کے مسلمانوں کے نام " کے زیر عنوان ایک پروگرام کا انعقاد کیا گیا-

لکھنؤ کے تاریخی چھوٹے امام باڑے میں منعقدہ اس پروگرام میں ہندوستان کے اہم شیعہ مذہبی رہنما اور امام جمعہ لکھنؤ مولانا کلب جواد نقوی نے نائیجیریا کی فوج کے ہاتھوں مارے گئے ایک ہزار سے زیادہ شیعہ مسلمانوں کی نسل کشی کی شدید الفاظ میں مذمت کی- مولانا کلب جواد نے کہا کہ نائیجیریا میں ہوئی شیعہ مسلمانوں کی نسل کشی کی جتنی بھی مذمت کی جائے کم ہے- انھوں نے کہا کہ آیت اللہ شیخ ابراہیم زکزکی کس حالت میں ہیں یہ ابھی تک واضح نہیں ہے اور نہ ہی نائیجیریا کی فوج کوئی واضح معلومات فراہم کر رہی ہے-

لکھنؤ کے امام جمعہ نے " ایک شام نائیجیریا کے مظلوموں کے نام " پروگرام میں شامل ہزاروں افراد سے خطاب کرتے ہوئے یہ سوال اٹھایا کہ اس وقت دنیا بھر کا میڈیا کہاں ہے؟ انھوں نے کہا کہ امریکہ سمیت مغربی ممالک میں ایک بھی شخص کی موت ہوتی ہے تو پوری دنیا کے ذرائع ابلاغ چیخنے لگتے ہیں۔ جبکہ گزشتہ دنوں نائیجیریا میں ایک ہزار سے زیادہ مسلمانوں کی نسل کشی ہو گئی اور ذرائع ابلاغ ان مظالم پر پوری طرح خاموشی اختیار کئے ہوئے ہیں- ہندوستان کے معروف شیعہ مذہبی رہنما مولانا کلب جواد نقوی نے ہندوستانی حکومت سے مطالبہ کیا کہ وہ نائیجیریا کی حکومت سے بات کر کے آیت اللہ زکزکی کی رہائی کے لئے دباؤ ڈالے-


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Monday - 2018 June 25