Wed - 2018 Dec 12
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 90268
Published : 29/12/2015 17:42

ایران کے اراکین پارلیمنٹ کا امریکہ سے تاوان کی وصولی کا مطالبہ

ایران کے ایک سو چھیاسٹھ ارکان پارلیمنٹ نے ایک بل پیش کیا ہے جس کے ذریعے امریکہ سے تاوان کی وصولی کا مطالبہ کیا گیا ہے۔

یہ بل انیس سو ترپن کے بعد سے ایران کے خلاف امریکہ کے مخاصمانہ اقدامات کے خلاف پیش کیا گیا ہے اور اس پر ایک سو چھیاسٹھ ارکان پارلیمنٹ نے دستخط کیے ہیں۔ بل پیش کرنے والوں نے امریکہ کی جانب سے ایران کے اثاثے منجمد رکھنے کا حوالہ دیتے ہوئے بل پر فوری بحث کرانے کا مطالبہ کیا ہے۔

بل پیش کرنے والے ایک رکن پارلیمنٹ نے ایران کے خلاف امریکہ کی جانب سے سلسلہ وار مخاصمانہ اقدامات کی جانب اشارہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ حکومت ایران کو بھرپور طریقے سے میدان میں اتر کر جوابی اقدامات انجام دینا چاہئیں۔

بل میں مطالبہ کیا گیا ہے کہ انیس سو ترپن میں سی آئی اے کی سرکردگی میں ایران کی اس وقت کی منتخب حکومت کے وزیراعظم کا تختہ الٹے جانے کے بعد ایران کو پہنچنے والے جانی اور مالی نقصانات کا تخمینہ لگاکر امریکہ سے تاوان وصول کیا جائے ۔

بل میں ایران کے خلاف عراقی ڈکٹیٹر صدام حسین کی مسلط کردہ جنگ کے دوران دو لاکھ تیئیس ہزار شہیدوں اور چھے لاکھ زخمیوں کے لیے بھی تاوان کی وصولی کا مطالبہ کیا گیا ہے۔ بل کے مطابق ایران کو یہ سارا نقصان صدام حکومت کے ساتھ امریکہ کے تعاون اور حمایت کے نتیجے میں برداشت کرنا پڑا ہے۔

بل پر دستخط کرنے والوں کا کہناہے کہ انیس سو چھیانوے میں سعودی عرب کے ہوٹل میں ہونے والے بم دھماکے کا ایران سے کیا تعلق تھا جو پہلے ایران کو قصوروار ٹھہرایا گیا اور بعد میں واضح ہوگیا کہ یہ القاعدہ کا کام تھا لیکن امریکیوں نے یک طرفہ طور پر ایران کے خلاف حکم جاری کیا۔


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Wed - 2018 Dec 12