Thursday - 2018 Nov 22
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 90878
Published : 7/1/2016 16:22

بحران شام کے بارے میں تہران میں سہ فریقی اجلاس کا انعقاد

بحران شام کی انسانی صورت حال کا جائزہ لینے کے لیے ایران، سوئٹزرلینڈ اور شام کا سہ فریقی اجلاس بدھ کے روز تہران میں منعقد ہوا جس میں تینوں ملکوں کے نائب وزرائے خارجہ نے شرکت کی۔

اسلامی جمہوریہ ایران کے نائب وزیر خارجہ حسین امیر عبداللہیان نے اس اجلاس کے آغاز میں ایران اور سعودی عرب کے تعلقات منقطع ہونے کو علاقے میں ایک نئی تبدیلی قرار دیا اور کہا کہ ریاض کے اس غلط اور بغیر سوچے سمجھے فیصلے کا علاقے اور شام سے متعلق مذاکرات پر اثر پڑے گا۔ انھوں نے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران شام کے بارے میں ویانا اور نیویارک مذاکرات کا پابند ہے اور وہ اقوام متحدہ اور شام کی حکومت کے ساتھ اپنے صلاح و مشورے کے ذریعے بحران شام کے حل کے لیے اپنی کوششیں جاری رکھے گا۔ انھوں نے اسی طرح سعودی عرب کے حکام کو نصیحت کی کہ وہ تاریخ سے سبق حاصل کریں اور علاقے کی تبدیلیوں میں تعمیری کردار ادا کریں۔

سوئٹزرلینڈ کے نائب وزیر خارجہ اور انسان دوستانہ امداد کے ادارے کے سربراہ مانوئل بسلر نے بھی اس اجلاس میں بحران شام کے حل میں ایران کی مدد و حمایت کو انتہائی موثر قرار دیا اور اپیل کی کہ ایران شام کے لیے اپنی انسان دوستانہ امداد میں اضافہ کرے-

شام کے نائب وزیر خارجہ احمد عرنوس نے بھی اس اجلاس میں کہا کہ بحران شام کی اصلی وجہ بعض ممالک کی جانب سے دہشت گردوں کی حمایت ہے- انھوں نے اس بات پر زور دیتے ہوئے کہ دہشت گرد گروہ داعش سرحدوں کو تسلیم نہیں کرتا ہے، کہا کہ شام نے روس کی فضائی مدد، ایران کی امداد اور ان کارروائیوں میں شریک مشیروں کے صلاح و مشورے سے شام کے بہت سے علاقوں کو دہشت گردوں کے قبضے سے آزاد کرا لیا ہے۔


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Thursday - 2018 Nov 22