Wed - 2018 july 18
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 90970
Published : 9/1/2016 13:9

ہندوستان کا پٹھان کوٹ ایئئر بیس پر حملے میں ملوث عناصر کے خلاف کارروائی کا ایک بار پھرمطالبہ

ہندوستان نے ایک بار پھر پاکستان سے ، پٹھان کوٹ ایئئر بیس پر حملے میں ملوث عناصر کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کیا ہے۔
ہندوستانی وزارت خارجہ کے ترجمان نے کہا ہے کہ مذاکرات کے تعلق سے اس وقت گیند پاکستان کی کورٹ میں ہے ۔ نئی دہلی سے ارنا کی رپورٹ کے مطابق ہندوستان کی وزارت خارجہ کے ترجمان وکاس سوروپ نے جمعے کے دن صحافیوں سے گفتگو میں کہا ہے کہ بقول ان کے پٹھان کوٹ ایئر بیس پر دہشت گردانہ حملے کے تعلق سے ضروری معلومات پاکستان کو فراہم کردی گئی ہیں اور اب نئی دہلی اسلام آباد کے ردعمل کا منتظر ہے۔ انھوں نے کہا کہ پٹھان کوٹ میں ہندوستانی ایئر بیس پر ہونے والے دہشت گردانہ حملے نے ایک بار پھر ثابت کر دیا ہے کہ سرحد پار دہشت گردی پر توجہ ضروری ہے۔ ہندوستانی وزارت خارجہ کے ترجمان نے اپنی پریس کانفرنس میں کہا کہ دہشت گردی اور مذاکرات ایک ساتھ نہیں چل سکتے ۔ وکاس سوروپ نے ہندوستان اور پاکستان کے درمیان پندرہ جنوری سے مجوزہ خارجہ سیکریٹریوں کی سطح کے مذاکرات کے بارے میں کہا کہ ہندوستان نے پاکستان سمیت اپنے تمام پڑوسی ملکوں کی طرف دوستی کا ہاتھ بڑھایا ہے لیکن دہشت گردی کو ہرگز برداشت نہیں کرے گا۔ ہندوستانی وزارت خارجہ کے ترجمان نے دونوں ملکوں کے وزرائے اعظم کی ٹیلیفونی گفتگو کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ ہندوستان کے وزیر اعظم نریندر مودی نے پاکستان کے وزیر اعظم نواز شریف سے مطالبہ کیا ہے کہ پٹھان کوٹ ایئر بیس پر حملے کے ذمہ داروں کے خلاف فوری کارروائی کی جائے۔ یاد رہے کہ گزشتہ ہفتے ہندوستان کے علاقے پٹھان کوٹ میں ہندوستانی ایئر بیس پر دہشت گردانہ حملے میں جو تین دن تک جاری رہا، سات ہندوستانی فوجی مارے گئے تھے۔ یہ حملہ چھے دہشت گردوں کی ہلاکت کے بعد ختم ہوا تھا۔


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Wed - 2018 july 18