Tuesday - 2018 Nov 20
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 91378
Published : 14/1/2016 19:0

امریکی صدر کے بیان پر روسی صدر کی تنقید

روس کے صدر ولادیمیر پوتن نے امریکا کو دنیا کی برتر طاقت ثابت کرنے اور بین الاقوامی تعلقات میں امریکا کے لئے خصوصی حق اور مراعات کے قائل ہونے کے تعلق سے باراک اوباما کے اصرار کو غلط قرار دیا ہے۔

کرملین کے پریس دفتر کے مطابق روسی صدر ولادیمیر پوتن نے امریکی صدر باراک اوباما کے اس بیان پر، جس میں انہوں نے روس کو ایک علاقائی طاقت قرار دیا، کہا کہ وہ اوباما کے اس بیان اور نظریے کو تسلیم نہیں کرتے کہ روس ایک علاقائی طاقت ہے۔ روسی صدر پوتن نے کہا کہ اگر آپ روس کو علاقائی طاقت کہتے ہیں تو یہ دیکھنا ہوگا کہ روس، کس علاقے میں واقع ہے۔

انہوں نے کہا کہ روس، مشرق سے چین اور جاپان اور مغرب کی سمت سے آلاسکا کے ذریعے امریکا کا پڑوسی ہے جبکہ شمال میں قطب شمال کے ذریعے کینیڈا کا ہمسایہ ہے اورمغرب کی جانب سے یورپی ملکوں کے پڑوس میں واقع ہے۔

روسی صدر نے کہا کہ اقتصادی حجم کے اعتبار سے روس، دنیا میں پانچویں اور چھٹے نمبر پر ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ موجودہ صورت حال میں اقتصادی مسائل کے پیش نظر ممکن ہے کہ یہ حجم کچھ کم ہو گیا ہو لیکن روس کی اقتصادی ترقی کے لئے مستقبل بہت ہی روشن ہے۔

پوتن نے کہا کہ ان کا ملک، عوام میں پائی جانے والی قوت خرید کے اعتبار سے دنیا میں چھٹے نمبر پر ہے۔

ولادیمیر پوتن نے روس کے کردار کے بارے میں اوباما کے بیان پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ کسی دوسرے ملک کو نیچا دکھانا اپنے آپ کو برتر دکھانے اور اپنے لئے خاص امتیاز کے قائل ہونے کی کوشش کی ایک دوسری شکل ہے اور اوباما کا یہ موقف غلط ہے۔

انہوں نے گروپ سات میں روس کے مقام کی جانب اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ پروگرام کے مطابق دو ہزار چودہ میں روس کو گروپ آٹھ کے اجلاس کا میزبان ہونا تھا لیکن روس کو کبھی بھی آٹھ صنعتی ملکوں کے گروپ آٹھ کا باقاعدہ ممبر ہی تسلیم نہیں کیا گیا کیونکہ بہت سے مواقع پر اس گروپ کے سات دیگر ملکوں کے وزرائے خارجہ، روس کے بغیر ہی مذاکرات کر لیتے تھے۔


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Tuesday - 2018 Nov 20