Monday - 2018 july 23
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 93522
Published : 24/1/2016 15:32

اسلامی تعاون تنظیم کے بیان پر ایران کا ردعمل

ایران کی وزارت خارجہ کے ترجمان نے ایران کے بارے میں اسلامی تعاون تنظیم کے حالیہ بیان کو اس تنظیم کو کمزور کرنے اور اس کے اراکین کے درمیان اختلاف کا باعث قرار دیا ہے-

رپورٹ کے مطابق وزارت خارجہ کے ترجمان حسین جابری انصاری نے جمعے کی رات جدہ میں اسلامی تعاون تنظیم کے ہنگامی اجلاس کے اختلافی بیان پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ یہ بیان اقوام متحدہ کے اصولوں کے منافی اور ایران کی نظر میں ناقابل قبول ہے- ایران کی وزارت خارجہ کے ترجمان نے اسلامی تعاون تنظیم کے اس بیان کو مسترد کردیا-

حسین جابری انصاری نے اس بات کا ذکر کرتے ہوئے کہ اسلامی تعاون تنظیم کی تشکیل کا مقصد امت مسلمہ کے سب سے بڑے مسئلے کے عنوان سے فلسطین پر غاصبانہ قبضے کا مقابلہ کرنا ہے کہا کہ فلسطینیوں کے غیر انسانی محاصرے اور عالمی امن و سلامتی کی دشمن دہشت گردی اور بڑھتی ہوئی انتہاپسندی کے خطرے کے پیش نظر او آئی سی کا یہ اجلاس بلانے پر سعودی عرب کا اصرار غیر ذمہ دارانہ اور عجلت میں اٹھایا جانے والا قدم تھا- ایران کی وزارت خارجہ کے ترجمان حسین جابری انصاری نے کہا کہ جدہ اجلاس کے بیان میں سعودی عرب کے سفارت خانے پر حملے کے سلسلے میں موجود حقائق اور سیکورٹی فراہم کرنے ، حالات کو کنٹرول کرنے نیز ملزمین سے نمٹنے کے لئے ایران کی جانب سے اٹھائے گئے فوری اقدامات کو نظرانداز کر کے اور غیرمتعلقہ موضوعات کو اٹھا کر ایک خاص ملک کے اہداف پورے کئے گئے ہیں- جابری انصاری نے کہا کہ اسلامی تعاون تنظیم کی پوزیشن ، باہمی محاذ آرائی سے نہیں بلکہ یکجہتی کے ساتھ اپنی ترجیحات اور مقاصد کا جائزہ لینے سے حاصل ہوسکتی ہے -

ایران کی وزارت خارجہ کے ترجمان نے کہا کہ تہران ، سعودی عرب کے ساتھ دوطرفہ مسائل کے حل کے تناظر میں اشتراک عمل کے تیار ہے اور ریاض کی غلط پالیسیوں کو ترک کرنے پر تاکید کرتا ہے کہ جس نے پورے علاقے کو موجودہ بحران سے دوچار کر دیا ہے- ایران کی وزارت خارجہ کے ترجمان نے تاکید کے ساتھ کہا کہ تہران ، اسلامی تعاون تنظیم کے تمام اراکین سے چاہتا ہے کہ وہ عاقلانہ اشتراک عمل سے مقبوضہ فلسطین اور بیت المقدس کی آزادی کے لئے ضروری حالات فراہم کریں-


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Monday - 2018 july 23