Thursday - 2018 Dec 13
Languages
دوستوں کو بھیجیں
News ID : 88952
Published : 8/12/2015 18:37

داعش کی بعض عرب اور مغربی ممالک حمایت کرتے ہیں: داعش کے ایک سرغنہ کا اعتراف

دہشت گرد گروہ داعش کے ایک اہم سرغنے نے اس بات کا اعتراف کیا ہے کہ داعش کا ذریعہ آمدنی فقط تیل کی فروخت نہیں ہے بلکہ صیہونی حکومت اور بعض عرب اور مغربی ممالک بھی اس گروہ کی مالی مدد کرتے ہیں-

داعش کے سرغنہ ابوبکرالبغدادی کے دست راست سمجھے جانے والے ایک سرغنے نےجسے عراقی سیکورٹی اہلکاروں نے گرفتار کرلیا ہے ا پنا نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پراعتراف کیا ہے کہ داعش کا مالی ذریعہ صرف تیل کی فروخت نہیں ہے- داعش کے مذکورہ سرغنے نے جو عراقی شہری اور ماضی میں کالعدم بعث پارٹی کا بھی رکن رہ چکا ہے بتایا کہ داعش ترکی کے راستے عراق کا تیل مختلف ملکوں کو فروخت کرکے آمدنی حاصل کرنے کے علاوہ دوسرے ملکوں سے بھی مالی امداد حاصل کرتاہے -

اس نے بتایا کہ قطر سالانہ ایک سوبیس ملین ڈالر، سعودی عرب پچاس ملین ڈالر، متحدہ عرب امارات پینتیس ملین ڈالراور بحرین سالانہ بارہ ملین ڈالر داعش کو دیتے ہیں -

داعش کے مذکورہ سرغنے نے بازپرس کے دوران بتایا کہ کویت بھی داعش کو سالانہ ساڑھے اٹھارہ لاکھ ڈالرمدد دیتاہے جبکہ صیہونی حکومت اور بعض مغربی ممالک بھی داعش کی مالی مددکرتے ہیں - ابوبکرالبغدادی کے اس قریبی دہشت گرد ساتھی نے بتایا کہ داعش کے پاس تقریبا باون ہزار افراد ہیں جن میں سے بائیس ہزارافراد کی تنخواہیں مقامی سطح پر داعش کی انتظامیہ کے ذریعے انہیں دی جاتیں ہیں اور باقی افراد کو تنخواہیں داعش کے حامی ممالک دیتے ہیں -

داعش کے اس دہشت گرد نے یہ بھی اعتراف کیا ہے کہ اس کے گروہ کو فوجی سازوسامان، گاڑیاں اور بکتربندگاڑیاں نیز طبی سہولتیں ترکی فراہم کرتاہے یہاں تک کہ داعش کے زخمی ہوجانےوالے دہشت گردوں کا علاج بھی ترکی کے اسپتالوں میں ہوتاہے -

اس کے علاوہ ترکی کے بہت سے فوجی مبصرین عراق میں موجودہیں جو داعش کو تربیت دینے اور دیگر جنگی معاملات میں ان کی مدد کرتے ہیں - داعش کے گرفتار کئے گئے اس سرغنے کا کہنا ہےکہ اس گروہ کے نوے فیصد سے زائد غیرملکی عناصر ترکی کے استنبول ہوائی اڈے کے ذریعے ترکی پہنچ کرعراق میں داخل ہو تے ہیں اور یہ ساراکام ترک حکام کے ساتھ مکمل ہم آہنگی سےانجام پاتاہے -


آپکی رائے



میرا تبصرہ ظاہر نہ کریں
تصویر امنیتی :
Thursday - 2018 Dec 13